Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / ارکان مقننہ اور قائدین کو انتخابات میں کامیابی کیلئے سرگرم ہونے کی ہدایت

ارکان مقننہ اور قائدین کو انتخابات میں کامیابی کیلئے سرگرم ہونے کی ہدایت

ٹی آر ایس اسٹیٹ کمیٹی اور لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس، چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو کا خطاب
حیدرآباد۔26 اکٹوبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے پارٹی ارکان مقننہ اور قائدین کو ہدایت دی ہے کہ وہ آئندہ انتخابات میں پارٹی کی دوبارہ کامیابی کے مقصد سے عوام کے درمیان سرگرم ہوجائیں۔ چیف منسٹر نے آج تلنگانہ بھون میں پارٹی ریاستی کمیٹی اور لیجسلیچر پارٹی اجلاس سے خطاب کیا۔ انہوں نے قائدین اور ارکان مقننہ کے درمیان باہم تال میل کی ضرورت ظاہر کی اور کہا کہ عوامی مسائل کی یکسوئی کے لیے یہ بیحد ضروری ہے۔ اجلاس کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے بتایا کہ چیف منسٹر نے اسمبلی اور کونسل کے کل سے شروع ہونے والے اجلاس کے سلسلہ میں ہدایات جاری کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات میں کامیابی ہر کسی کا مقصد اور مشن ہونا چاہئے۔ اسی کو پیش نظر رکھتے ہوئے قائدین متحرک ہوجائیں۔ انہوں نے اسمبلی اور کونسل کے ارکان کو ہدایت دی کہ سیشن کے دوران صدفیصد یقینی بنائیں اور مباحث میں مکمل معلومات کے ساتھ حصہ لیں۔ انہوں نے وزراء اور ارکان اسمبلی سے کہا کہ کسی بھی مسئلہ کے بارے میں مکمل تفصیلات اور تیاری کے ساتھ اسمبلی آئیں تاکہ اپوزیشن کے سوالات کا موثر جواب دیا جاسکے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اپوزیشن کے الزامات کا مناسب جواب دینے کے لیے عہدیداروں اور ارکان کے پاس تفصیلات ہونی چاہئے۔ انہیں چاہئے کہ وہ اپوزیشن کے الزامات کا حقیقی اعداد و شمار کے ساتھ جواب دیں۔ چیف منسٹر نے اسمبلی اجلاس کے پہلے دن کانگریس کی جانب سے چلو اسمبلی احتجاج کو افسوسناک قرار دیا اور کہا کہ اسمبلی اور کونسل میں عوامی مسائل پر حکومت کی توجہ مبذول کرانے کے بجائے اس طرح کے احتجاجی پروگرام منعقد کرنا افسوسناک ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کسی بھی ریاست میں اسمبلی اجلاس کے پہلے دن ہی اپوزیشن کی جانب سے اس طرح کے احتجاج کی کوئی مثال نہیں ملتی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے مسائل پر مباحث کے لیے اسمبلی اجلاس کے ایام کی کوئی قید مقرر نہیں کی لیکن اپوزیشن طویل اجلاس کے حق میں دکھائی نہیں دیتی۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت ترقی اور فلاحی اسکیمات میں دوسری ریاستوں سے آگے ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ حکومت کے پاس 50 روزہ سیشن میں مباحث کے لیے موضوعات موجود ہیں اور حکومت نے جب 50 دن کے اجلاس کا فیصلہ کیا تو اپوزیشن کے پاس کوئی جواب نہیں رہا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ابھی تک 60 لاکھ افراد نے ٹی آر ایس کی رکنیت قبول کرلی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ارکان کے لیے انشورنس کے طور پر کمپنی کو 9 کروڑ 87 لاکھ روپئے ادا کیے گئے۔ چیف منسٹر نے ارکان سے کہا کہ وہ کسی عذر کی صورت میں ایوان سے غیر حاضری کی اطلاع متعلقہ ضلع کے وزیر کو دیں۔ انہوں نے ارکان کی حاضری کو یقینی بنانے کے لیے ہر ضلع کے وزراء کو ذمہ دار قرار دیا اور کہا کہ انہیں ارکان کے ساتھ تال میل برقرار رکھنا چاہئے۔ کے سی آر نے مشورہ دیا کہ کبھی بھی اپوزیشن کو کمزور نہ سمجھا جائے اگرچہ تعداد میں اپوزیشن کم ہے لیکن برسر اقتدار پارٹی کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپوزیشن کی جانب سے اٹھائے گئے سوالات کا موثر انداز میں جواب دیں۔ انہوں نے کہا کہ وقفہ سوالات اور مختصر مدت کے مباحث کے امور کے سلسلہ میں ارکان چاہیں تو عہدیداروں اور وزراء سے مواد حاصل کرسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT