Saturday , October 20 2018
Home / شہر کی خبریں / ارکان پارلیمنٹ کو انتخابی حلقوں میں قیام کرنے چیف منسٹر کی ہدایت

ارکان پارلیمنٹ کو انتخابی حلقوں میں قیام کرنے چیف منسٹر کی ہدایت

دہلی سے فوری واپسی کا مشورہ، کانگریس بس یاترا اور پنچایت انتخابات کے پیش نظر فیصلہ
حیدرآباد ۔ 5 ۔اپریل (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ارکان پارلیمنٹ کو ہدایت دی ہے کہ وہ فوری نئی دہلی سے واپس ہوجائیں اور اپنے اپنے انتخابی حلقوں میں عوام کیلئے دستیاب رہیں۔ باوثوق ذرائع کے مطابق چیف منسٹر نے یہ ہدایت اس وقت جاری کی جب پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کی کارروائی آج غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی گئی۔ عموماً بعض ارکان پارلیمنٹ دہلی میں قیام کرتے ہوئے مرکزی وزراء سے نمائندگی کرتے ہیں یا پھر تفریحی مقامات کیلئے روانہ ہوجاتے ہیں۔ ریاست میں کانگریس کی بس یاترا اور پنچایت راج اداروں کے مجوزہ انتخابات کے پس منظر میں چیف منسٹر نے تمام ارکان پارلیمنٹ کو فوری واپس آنے کی ہدایت دی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر بہت پہلے ہی یہ ہدایت جاری کرنے والے تھے، تاہم لوک سبھا میں حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر مباحث کے امکانات کو دیکھتے ہوئے ارکان پارلیمنٹ کو دہلی میں قیام کا مشورہ دیا ہے ۔ نومنتخب ارکان راجیہ سبھا کی حلف برداری کل مکمل ہوگئی جس کے بعد سے ارکان کی دہلی میں موجودگی کی ضرورت باقی نہیں رہی۔ چیف منسٹر کی ہدایت کے مطابق ارکان پارلیمنٹ کو اپنے انتخابی حلقوں میں عوام کے درمیان موجود رہنا چاہئے تاکہ عوامی مسائل کی یکسوئی کرسکے۔ چیف منسٹر کو مختلف ذرائع سے رپورٹ موصول ہوئی تھی کہ عوامی نمائندوں کی غیر موجودگی کے باعث عوام میں ناراضگی پائی جاتی ہے۔ ریاستی وزراء ، ارکان مقننہ اور ارکان پارلیمنٹ تینوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ زیادہ سے ز یادہ وقت اپنے انتخابی حلقوں میں گزاریں۔ ارکان مقننہ سے کہا گیا کہ وہ چیف منسٹر یا وزراء سے ملاقات کیلئے حیدرآباد کا رخ نہ کریں۔ چیف منسٹر کی سرکاری قیامگاہ پرگتی بھون میں ارکان مقننہ کے لئے ملاقات کا کوئی وقت مقرر نہیں کیا گیا ہے جبکہ سابق میں چیف منسٹر روزانہ ارکان مقننہ سے دو گھنٹے ملاقات کرتے رہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر اس روایت کے خلاف ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ چیف منسٹر اور وزراء کے چکر کاٹنے کے بجائے عوامی مسائل کی یکسوئی پر توجہ مرکوز کی جائے ۔ کانگریس کی بس یاترا کے موقع پر بھاری تعداد میں عوام کی شرکت کی اطلاعات پر چیف منسٹر نے چوکسی اختیار کرلی۔ بتایا جاتا ہے کہ اگست میں پنچایت راج اداروں کے انتخابات منعقد ہوں گے ۔ اس وقت تک عوامی نمائندوں کو زیادہ تر وقت اپنے علاقوں میں گزارنا ہوگا۔ پنچایت انتخابات میں پارٹی کے مظاہرہ کی بنیاد پر ارکان مقننہ کے مستقبل کا فیصلہ ہوگا۔ جن حلقوں میں پارٹی بہتر مظاہرہ کرے گی ، وہاں کے ارکان مقننہ کو دوبارہ پارٹی ٹکٹ مل سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق چیف منسٹر بہت جلد لیجسلیچر پارٹی اور ریاستی عاملہ کا اجلاس طلب کریں گے۔ اس کے علاوہ مختلف محکمہ جات کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا تاکہ اسکیمات پر موثر عمل آوری کو یقینی بنایا جاسکے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT