Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / ازدواجی زندگی کی کامیابی کا راز بلند اخلاق و دینی مزاج

ازدواجی زندگی کی کامیابی کا راز بلند اخلاق و دینی مزاج

لڑکی کے انتخاب میں وفا شعار اور اوصاف کو پیش نظر رکھنے کا مشورہ، سیاست و ایم ڈی ایف شیعہ برادری کا دوبدو پروگرام

حیدرآباد 17 جنوری (سیاست نیوز) میناریٹی ڈیولپمنٹ فورم و سیرت الزہرہ کمیٹی کے زیراہتمام شیعہ برادری کے لئے چوتھا خصوصی دو بہ دو ملاقات پروگرام آج دیوڑھی حسینیہ نواب عنایت جنگ بہادر منڈی میر عالم میں منعقد ہوا۔ جس میں 2000 سے زائد لڑکوں اور لڑکیوں کے والدین اور سرپرستوں نے شرکت کی۔ والدین اور سرپرستوں نے باہمی مشاورت اور کونسلنگ کی مدد سے کئی رشتے طے کئے۔ سیاست اور ایم ڈی ایف کی جانب سے قبل ازیں شیعہ برادری کے لئے 3 دو بہ دو پروگرام منعقد کئے جاچکے ہیں اور آج اسی سلسلہ میں چوتھا پروگرام نہایت کامیابی کے ساتھ اختتام کو پہنچا جس میں شہر حیدرآباد کے علاوہ اضلاع سے بھی شیعہ والدین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ رجسٹریشن کا آغاز 2 بجے دن سے ہوا۔ لڑکوں اور لڑکیوں کے لئے علیحدہ علیحدہ رجسٹریشن کاؤنٹرس بنائے گئے تھے۔ لڑکیوں کے رجسٹریشن کاؤنٹر پر ایم اے قدیر، رفیعہ سلطانہ ثانیہ اور فرزانہ بانو نے رجسٹریشن کا کام انجام دیا جبکہ لڑکیوں کے رجسٹریشن پر افسر سعیدہ، محمدی بیگم کو متعین کیا گیا تھا۔ محترمہ خدیجہ سلطانہ نہ خواتین میں انتظامات کی نگرانی کی۔ قبل ازیں جلسہ شعور بیداری کا اہتمام کیا گیا۔ جس کی صدارت جناب عابد صدیقی صدر ایم ڈی ایف نے کی۔ مولانا خورشید حسین، مولانا مہدی علی ہادی، مولانا علی مرتضیٰ اور آغا محمد علی سروش نے مہمانان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ ابتداء میں جناب علی رضا کنوینر و صدر مرکزی سیرت الزہرہ کمیٹی نے خیرمقدم کرتے ہوئے کہاکہ ادارہ سیاست اور ایم ڈی ایف کی سرپرستی اور تعاون کے باعث آج یہ پروگرام منعقد کیا جارہا ہے جس کا مقصد شیعہ لڑکوں اور لڑکیوں کے رشتوں کو والدین اور سرپرستوں کی باہمی مشاورت کے ذریعہ طے کرنا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ اس سے قبل تین پروگراموں میں کئی رشتے طے کرنے میں والدین کو کافی مدد ملی۔ مولانا خورشید حسین نے کہاکہ ازدواجی زندگی کی کامیابی کا راز بلند اخلاق اور دینی مزاج ہے۔ والدین کو چاہئے کہ لڑکی کے انتخاب میں ایک وفا شعار ہونے کے ساتھ ساتھ مستقبل میں بننے والی ماں کے اوصاف کو بھی پیش نظر رکھے۔
انھوں نے کہاکہ آج مسلم معاشرہ میں لڑکوں اور لڑکیوں کے انتخاب کا معیار دولت، حسن و جمال اور ظاہر داری ہوگیا ہے جس کے نتائج سنگین ہوتے جارہے ہیں۔ اُنھوں نے ادارہ سیاست کی کوششوں کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیا۔ انھوں نے تجویز پیش کی کہ لڑکوں اور لڑکیوں کے بائیو ڈاٹاس میں دو کالم کا اضافہ کیا جانا چاہئے پہلے کالم میں ان کا مذہبی پس منظر اور دوسرے کالم میں اُن کی دلچسپیوں کا اندراج کیا جانا چاہئے جو باہمی محبت اور مزاج کی ہم آہنگی کے لئے ضروری ہے۔ مولانا مہدی علی ہادی نے والدین اور سرپرستوں کو مشورہ دیا کہ وہ لڑکوں اور لڑکیوں کے رشتے طے کرنے میں اسلامی تعلیمات، سیرت اور کردار اور خاندانی شرافت کو بنیادی اہمیت دیں۔ انھوں نے کہاکہ سیاست اور ایم ڈی ایف کی جانب سے پیامات کی نشاندہی کا ایک بڑا اور اہم کام انجام دیا جارہا ہے لیکن والدین کی ذمہ داری ہے کہ وہ رشتہ طے کرنے اچھی طرح سے معلومات بھی کریں۔ لڑکے اور لڑکی کی صورت دیکھ کر یا ماں باپ کی دولت سے متاثر ہوکر جلد بازی میں کوئی فیصلہ نہ کریں۔ دولت اور ثروت اکثر صورتوں میں انسان کے لئے مشکلات پیدا کرتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ مسلم معاشرہ میں طلاق اور خلع کے بڑھتے ہوئے واقعات شرمناک ہیں۔ اس سنگین صورتحال سے بچنے کے لئے اسلامی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت اور حضور اکرم ﷺ نے رشتوں کے انتخاب کے لئے جو معیار مقرر فرمایا ہے، اُس کو مکمل اختیار کرنا ضروری ہے۔ جناب عابد صدیقی صدر ایم ڈی ایف نے اپنی صدارتی تقریر میں کہاکہ سیاست اور ایم ڈی ایف کے دو بہ دو ملاقات پروگرام نے ہندوستان گیر مقبولیت حاصل کرلی ہے۔ گزشتہ 52 پروگرام کے ذریعہ 6020 سے زائد شادیاں طے پاچکی ہیں اور اب تک 12,073 مفت رجسٹریشن کئے جاچکے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ مسلم معاشرہ آج تک بھی غیر اسلامی رسم و رواج کا چنگل سے نجات نہیں پاسکا۔ زندگی کے معاملات بالخصوص شادیوں میں تصنع، بناوٹ اور جھوٹی شان نے ہمارے معاشرہ کو کمزور بنادیا ہے۔ ہم حضور ﷺ سے نسبت اور اہلبیت سے محبت کا ہر وقت دم بھرتے ہیں لیکن اُن کی تعلیم اور اُن کے عمل کو یکسر نظرانداز کردیا جاتا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ وقت آگیا ہے کہ مسلمان معاشرہ سے بُرائیوں کو دور کرنے کے لئے کمربستہ ہوجائیں اور حضور اکرم ﷺ کے ابدی پیغام کو اپنی زندگیوں میں جاری و ساری کریں۔ جناب علی رضا صدر سیرت الزہرہ کمیٹی نے شکریہ ادا کیا۔ کونسلنگ کے آغاز کا اعلان کیا۔ جناب محمد عبدالصمد خان، میر انورالدین، سید ناظم الدین، محمد شاہد حسین، ڈاکٹر ایوب حیدری، احمد صدیقی مکیش، ایم اے واحد، محمد نصراللہ خان، محمد احمد نے کونسلنگ میں حصہ لیا اور بائیو ڈاٹاس پڑھ کر سنائے۔ اسی طرح خواتین میں بھی خدیجہ بیگم، کوثر جہاں اور دوسروں نے کونسلنگ میں حصہ لیا۔ ایم اے قدیر نائب صدر فورم نے دو بہ دو پروگرام کے انتظامات کی نگرانی کی۔ سیاست کے محمد حامد، محمد اسماعیل، سریکانت اور محمد میاں نے انتظامات کئے۔ اس موقع پر ایل ایس ڈی اسکرین آویزاں کیا گیا تھا جس پر لڑکوں کے تصاویر اور بائیو ڈاٹا دیکھنے کی سہولت فراہم کی گئی جس میں شیکھر نے اسکرین آپریٹر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ جناب ایم اے قدیر کے شکریہ پر دو بہ دو ملاقات پروگرام 6 بجے شام اختتام کو پہنچا۔ آج کے پروگرام میں لڑکوں اور لڑکیوں کے بڑے پیمانے پر رجسٹریشن کروائے گئے۔

TOPPOPULARRECENT