Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / استعفے کا مطالبہ، صرف میڈیا میں قیاس آرائیاں : تیجسوی یادو

استعفے کا مطالبہ، صرف میڈیا میں قیاس آرائیاں : تیجسوی یادو

ڈپٹی چیف منسٹر بہار کے پاس صرف دو راستے، استعفیٰ یا برطرفی: بی جے پی
پٹنہ۔17 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے ڈپٹی چیف منسٹر تیجسوی یادو نے اپنے استعفے کے لیے بڑھتے ہوئے مطالبہ کو محض میڈیا کی قیاس آرائی قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا ہے لیکن بی جے پی نے کہا ہے کہ ان کے پاس اب استعفیٰ یا برطرفی جیسے دو ہی راستے باقی رہ گئے ہیں۔ تیجسوی یادو نے اسمبلی کے باہر اخباری نمائندوں کی جانب سے ان کے استعفیٰ کے مطالبہ میں شدت سے متعلق ایک سوال پر جواب دیا کہ ’’یہ (استعفیٰ کا مطالبہ) صرف میڈیا میں ہے‘‘تیجسوی نے 15 جولائی کو ایک سرکاری تقریب میں شرکت سے گریز کیا تھا جس میں انہیں چیف منسٹر نتیش کمار کے ساتھ شہ نشین پر بیٹھنا تھا۔ ان کے اس اقدام سے جے ڈی (یو) اور آر جے ڈی کے درمیان بڑھتی ہوئی رنجشیں اب نقطہ انجام پر پہونچ رہی ہیں۔ جو ڈپٹی چیف منسٹر کے خلاف سی بی آئی کی طرف سے ایک ایف آئی آر درج کرنے کے بعد شروع ہوئی تھیں۔آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو نے اپنے بیٹے تیجسوی کے استعفیٰ کے مطالبہ کو مسترد کردیا ہے اور تیجسوی بھی عہدہ نہ چھوڑنے کے فیصلہ پر اٹل ہیں۔ اس دوران بی جے پی لیڈر سشیل مودی نے کہا کہ ’’تیجسوی کے پاس اب دو راستے رہ گئے ہیں وہ مستعفی ہوجائیں یا برطرفی کا سامنا کریں۔‘‘ سشیل کمار مودی نے جو اس ریاست میں بی جے پی پارلیمانی بورڈ کے سربراہ بھی ہیں نتیش کمار پر زور دیا کہ وہ (تیجسوی سے استعفیٰ کی طلب کے لیے) اپنی بنیادوں پر ثابت قدم رہیں۔ بی ج پی اس مسئلہ پر فیصلے میں ان نتیش کے ساتھ ہے۔ سشیل کمار مودی نے کہا کہ ریاستی کابینہ میں ایسے رکن کی موجودگی سے حکومت کی ساکھ متاثر ہوسکتی ہے جس کے خلاف رشوت ستانی کے ضمن میں سی بی آئی نے ایف آئی آر درج کیا ہے۔ بی جے پی لیڈر نے چیف منسٹر پر زور دیا کہ وہ رشوت ستانی کے خلاف اپنے وعدے کو عملی شکل دینے کے لیے بروقت ضروری اقدامات کریں۔ انہوں نے کہا کہ رشوت کے خلاف لڑائی میں بی جے پی پوری طرح ساتھ رہے گی ۔

TOPPOPULARRECENT