Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / اسد الدین اویسی کی قانونی امداد کی پیشکش ٹھکرادی گئی

اسد الدین اویسی کی قانونی امداد کی پیشکش ٹھکرادی گئی

حیدرآباد۔/20جولائی، ( سیاست نیوز) صدر مجلس اتحادالمسلمین اسد الدین اویسی کو آج اس وقت منہ کی کھانی پڑی جب دہشت گردی کے الزام میں گرفتار مسلم نوجوانوں کے والدین نے صدر مجلس کی قانونی امداد کی پیشکش کو ٹھکرادیا۔ داعش کے مبینہ کارکن ہونے کے الزام میں قومی تحقیقاتی ایجنسی نے شہر سے چند مسلم نوجوانوں کو حراست میں لے لیا تھا۔ 7کے منجملہ 2 مسلم نوجوانوں کے والدین نے اسد اویسی کی پیشکش کو مسترد کردیا۔ ابراہیم یزدانی اور الیاس یزدانی کے خاندان کے ارکان نے ریاستی انسانی حقوق کمیشن سے رجوع ہوکر ایک کروڑ روپئے کا معاوضہ دینے کا مطالبہ کیا۔ ان لوگوں نے مجلس اتحادالمسلمین کے بشمول سیاسی پارٹیوں پر تنقید کی کہ یہ اس مسئلہ پر ووٹ بینک کی سیاست کررہے ہیں۔ یزدانی کے ارکان خاندان نادرہ اور محمد اسحاق یزدانی نے درخواست میں لکھا کہ حیدرآباد کی ایم آئی ایم کے بشمول ملک کی ہر پارٹی این آئی  اے کے جھوٹے کیس کا فائدہ اٹھانے کی کوشش کررہی ہے اور ووٹ بینک کی سیاست کررہی ہے۔ مذہب کے نام پر ووٹوں کو تقسیم کیا جارہا ہے، اس ملک میں رہنے والے مسلمانوں کے احساسات کا قتل کیا جارہا ہے۔
اسد الدین کا کہنا ہے کہ این آئی اے نے  وزارت داخلہ ، تلنگانہ ڈی جی پی ، پرنسپل سکریٹری داخلہ تلنگانہ حکومت کے علاوہ سیاسی پارٹیاں ان کے بچوں کو جھوٹے کیس میں پھانسنے کے ذمہ دار ہیں ۔ ان کی یہ سازش انسانی حقوق کے مختلف دفعات کی خلاف ورزی ہے۔

TOPPOPULARRECENT