Monday , September 24 2018
Home / Top Stories / اسرائیلی نوآبادیات اقدام پر امریکی ردعمل کا مطالبہ

اسرائیلی نوآبادیات اقدام پر امریکی ردعمل کا مطالبہ

رملہ 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) فلسطینیوں نے آج امریکہ سے مطالبہ کیاکہ اسرائیلی نوآبادیات میں تازہ تعمیرات کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ جبکہ یہودی مملکت نے 1500 سے نئے مکانات کی نوآبادیات میں تعمیر کا اعلان کیا ہے۔ صدر فلسطین محمود عباس کے ایک مشیر نمر حمد نے کہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ امریکی انتظامیہ حکومت اسرائیل کے خلاف سخت اقدامات ک

رملہ 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) فلسطینیوں نے آج امریکہ سے مطالبہ کیاکہ اسرائیلی نوآبادیات میں تازہ تعمیرات کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ جبکہ یہودی مملکت نے 1500 سے نئے مکانات کی نوآبادیات میں تعمیر کا اعلان کیا ہے۔ صدر فلسطین محمود عباس کے ایک مشیر نمر حمد نے کہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ امریکی انتظامیہ حکومت اسرائیل کے خلاف سخت اقدامات کرے۔ اسرائیل کے وزیر ہاؤزنگ اوری ایریل نے 1500 نئے مکانات کی یہودی نوآبادیات میں تعمیر کے لئے ٹنڈر طلب کئے ہیں۔ حماس کی تائید یافتہ نئی فلسطینی حکومت کے خلاف اسرائیل کی یہ جوابی کارروائی ہے۔

اسرائیل کے زیرقبضہ مشرقی یروشلم میں 400 مکان تعمیر کردیئے جائیں گے۔ جبکہ باقی مکان زیرقبضہ مغربی کنارہ کے دیگر مقامات پر تعمیر کئے جائیں گے۔ نمر حمد نے کہاکہ وہ اِس فیصلہ سے شدید مذمت کرتے ہیں۔ جبکہ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو نے اِس کی توثیق کردی ہے اور ایسا معلوم ہوتا ہے کہ وہ تنازعہ کے دو مملکتی حل سے متفق نہیں ہیں۔ محمود عباس کے ترجمان نبیل ابو ردینہ نے انتباہ دیا کہ فلسطینی اِس اقدام کا ایسا جواب دیں گے جس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ تاہم اُنھوں نے اپنے بیان کی وضاحت نہیں کی۔ ابو ردینہ نے کہاکہ یہ اقدام ایک ایسے وقت منظر عام پر آیا ہے

جبکہ پوری دنیا فلسطین کی متحدہ حکومت کی تائید کررہی ہے۔ اسرائیل کو احساس ہونا چاہئے کہ اِس کی نوآبادیاتی پالیسی ناقابل قبول ہے۔ محمود عباس نئے متحدہ انتظامیہ کے صدر کی حیثیت سے عنقریب حلف لینے والے ہیں۔ اُن کو اسرائیل کے کٹر دشمن حماس کی تائید بھی حاصل ہے۔ اسرائیل تقریب حلف برداری کا بائیکاٹ کررہا ہے۔ اُس کا کہنا ہے کہ یہ دہشت گرد حکومت ہوگی لیکن یوروپی یونین اور امریکہ نے نئی حکومت کے ساتھ اشتراک و تعاون کا اعلان کیا ہے۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے نوآبادیات کی مسلسل توسیع امریکہ کی ثالثی سے شروع کردہ امن مذاکرات کی ناکامی کی سب سے بڑی وجہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT