Sunday , January 21 2018
Home / اضلاع کی خبریں / اسرائیل نواز حکومت کو فلسطینیوں سے کوئی ہمدردی نہیں

اسرائیل نواز حکومت کو فلسطینیوں سے کوئی ہمدردی نہیں

نظام آباد ۔ 24 ۔ جولائی ( فیاکس) بیت المقدس کی سرزمین بے گناہ مسلمانوں کے خون سے رنگی ہوئی ہے ۔ فلسطین کے غزہ پر سفاک صیہونی فوج کی جانب سے فضائی اور زمینی حملوں میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران سنکڑوں مرد و خواتین اور بچے شہید ہوچکے ہیں ۔ شہدا کی تعداد سینکڑوں سے بڑھ کر ہزاروں تک پہونچ گئی ہے لیکن عالم اسلام کی بے عملی اور ناکارہ سیاست اسل

نظام آباد ۔ 24 ۔ جولائی ( فیاکس) بیت المقدس کی سرزمین بے گناہ مسلمانوں کے خون سے رنگی ہوئی ہے ۔ فلسطین کے غزہ پر سفاک صیہونی فوج کی جانب سے فضائی اور زمینی حملوں میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران سنکڑوں مرد و خواتین اور بچے شہید ہوچکے ہیں ۔ شہدا کی تعداد سینکڑوں سے بڑھ کر ہزاروں تک پہونچ گئی ہے لیکن عالم اسلام کی بے عملی اور ناکارہ سیاست اسلام دشمن یہودیوں کی جارحیت کو روکنے میں ناکام ہوچکی ہے ۔ ان الفاظ میں قاضی سید ارشد پاشاہ سینئر قائد کانگریس و سابق وائس چیرمین میونسپل کونسل نے اسرائیلی بربریت پر شدید تنقیدکرتے ہوئے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ بحالت موجودہ ملک میں عرب دوست کانگریس حکومت نہیں ہے بلکہ آر ایس ایس کے پرچم تلے بی جے پی کی حکومت اقتدار پر فائز ہے جس کو فلسطینی عوام کی زندگی اور موت سے کوئی دلچسپی نہیں ہے ۔گجرات میں سرکاری سرپرستی میں ہزاروں مسلمانوں کو لوٹ کر موت کے گھاٹ اتار دیا گیا تو اس نے آج تک گجرات المیہ پر کوئی اظہار افسوس کیا اور نہ ہی اس کو شرمندگی ہے ۔ تو ملک کے تمام سیکولر انصاف پسند جماعتیں اس صورتحال پر تشویش ظاہر کررہی ہے کہ اسرائیلی بربریت کے خلاف پارلیمنٹ میں کوئی قرارداد منظور کرنے سے بھی کسی کو دلچسپی نہیں ۔ انہوں نے تمام مسلم ملکوں کا اتحاد کو ناگزیر قرار دیا اور کہا کہ اسلام دشمن طاقتوں کی ریشہ دوانیوں کی وجہ بیشتر مسلم ملکوں میں مسلمان آپس میں خون ریزی کررہے ہیں ۔ اتحاد بین المسلمین وقت کا تقاضہ ہے ۔ انہوں نے ملک کی تمام مسلم جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ مسئلہ فلسطین اور موجودہ اسرائیلی حملوں سے پیدا شدہ صورتحال کا جائزہ لے کر متحدہ طو رپر اسرائیل کے خلاف صدائے احتجاج بلند کریں اور مودی سرکار سے جمہوری طور پر احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کریں کہ وہ اسرائیلی جارحیت کے خلاف لب کشائی کرے اور پارلیمنٹ میں قرارداد مذمت منظور کرائے اور اسرائیل کے ساتھ سفارتی اور کاروباری تعلقات کو استوار نہ کرے ۔انہوں نے یاد دلایا کہ آنجہانی اندرا گاندھی کے دور میں فلسطین پر ناجائز قابض یہودی حکومت کو ہمارے ملک میں اپنے مقاصد کی تکمیل کے کوئی موقع نہیں دیا گیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT