Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اسلامک اسٹڈیز کا موضوع مذہبی شناخت کے ساتھ عالمی تاریخ کا اہم حصہ

اسلامک اسٹڈیز کا موضوع مذہبی شناخت کے ساتھ عالمی تاریخ کا اہم حصہ

اردو یونیورسٹی میںاورینٹیشن پروگرام ، مولانا سید عبدالرشید اور دیگر کا خطاب
حیدرآباد ۔ 8 ۔ اگست : ( پریس نوٹ ) : مولانا آزاد نیشنل اُردو یونیورسٹی، شعبہ اسلامک اسٹڈیز، میں تعلیمی سال کے آغاز کے موقع پر نئے طلبہ کو شعبہ کے نصاب ونظام اور سرگرمیوں سے متعارف کرانے کے لئے ایک روزہ اورینٹیشن پروگرام منعقد کیا گیا، جس میں ایم اے،ایم فل اور پی ایچ ڈی کے طلبہ نے شرکت کی۔مولانا سید عبد الرشید نے ’’شعبہ اسلامک اسٹڈیز ، مانو اور اس کا نصاب‘‘ پر خطاب کیا اور نصاب کا تعارف پیش کرنے کے ساتھ طلبہ کو دینی مدارس اور عصری اداروں سے وابستہ افراد کے درمیان موجود خلاء کو پر کرنے کی طرف توجہ دلائی، ڈاکٹر محمد عرفان احمد نے ’’شعبہ کا نظام تدریس اور داخلی امتحانات‘‘ پر مخاطب کیا، ’’اسلامی مطالعات فورم‘‘، ’’اسلامی مطالعات دیواری پرچہ‘‘ اور ’’مجلہ اسلامی مطالعات ‘‘ کے نام سے انجام دی جانے والی طلبہ کی علمی سرگرمیوں کا تعارف کروایا ۔ ڈاکٹر قدیر خواجہ نے ’’اسلامک اسٹڈیز کی اہمیت ‘‘ پر اپنا لکچر پیش کیا۔ڈاکٹر محمد فہیم اختر نے ’’ایم اے اسلامیات کی تکمیل کے بعد ممکنہ مواقع‘‘ پر اپنا خطاب کیا، اور علمی ، انتظامی اور سماجی خدمات کے میدانوں میں اسلامک اسٹڈیز کے روشن مستقبل کے حوالہ سے گفتگو کی۔ مہمان خصوصی ڈین اسکول برائے فنون اور سماجی علوم پروفیسر ایس ایم رحمت اللہ نے اختتامی کلمات میں کہا کہ اسلامک اسٹڈیز کا موضوع جہاں ایک طرف اسلامی علوم سے جڑا ہوا ہے، وہیں اپنے مذہبی پہلو کے ساتھ عالمی تاریخ کا اہم حصہ ہے، شعبہ میں مختلف مشرب ومسلک کے لوگ جمع ہوتے ہیں، اگر ہم وسیع النظری کے ساتھ دانش گاہو ں کا رخ کریں گے تو غلط فہمیاں دور ہوں گی ، اور فاصلے کم ہوں گے۔ پروگرام کا آغاز طفیل احمد کی تلاوت قرآن مجید سے ہوا، محمد خالد نے نعت شریف پیش کی، محترمہ ذیشان سارہ نے جدید طلبہ کا استقبال کیا، نظامت کے فرائض محترمہ سیدہ آمنہ نے انجام دئے۔

TOPPOPULARRECENT