Friday , June 22 2018
Home / دنیا / اسلحہ پرامتناع برخاست کرنے ایران کا مطالبہ

اسلحہ پرامتناع برخاست کرنے ایران کا مطالبہ

ویانا 8 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ایران نے عالمی طاقتوں سے اپیل کی ہے کہ ملک کو ہتھیاروں کی فروخت کے لئے اقوام متحدہ کی جانب سے عائد کی گئی تحدیدات کو برخاست کیا جائے۔ ایران کا کہنا ہے کہ نیوکلیر معاہدہ جسے عنقریب قطعی موقف حاصل ہونے والا ہے، ہتھیاروں کی فروخت پر عائد امتناع اس معاہدہ کی راہ میں حائل ہوسکتا ہے۔ اس لئے عالمی طاقتیں اگر اپ

ویانا 8 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ایران نے عالمی طاقتوں سے اپیل کی ہے کہ ملک کو ہتھیاروں کی فروخت کے لئے اقوام متحدہ کی جانب سے عائد کی گئی تحدیدات کو برخاست کیا جائے۔ ایران کا کہنا ہے کہ نیوکلیر معاہدہ جسے عنقریب قطعی موقف حاصل ہونے والا ہے، ہتھیاروں کی فروخت پر عائد امتناع اس معاہدہ کی راہ میں حائل ہوسکتا ہے۔ اس لئے عالمی طاقتیں اگر اپنے موقف میں تبدیلی کریں تو بہتر ہوگا۔ ایران کے مذاکرات کار عباس اراغچی نے ریاستی ٹیلی ویژن پر کل یہ بات کہی اور بتایا کہ معاہدہ کا متن اور بیشتر منسلکات کو قطعیت دی جاچکی ہے۔ لہذا اب وقت آگیا ہے کہ مغربی ممالک ایران پر عائد تحدیدات کو برخاست کریں۔ اگر P5+1 ممالک کسی معاہدہ کے واقعتاً خواہاں ہیں تو تحدیدات برخاست کرنا ہی ہوگا۔ دوسری طرف امریکی عہدیدار اس بات پر مصر ہیں کہ ایران پر ہتھیاروں کی فروخت کا امتناع عائد رہے گا جس طرح میزائیلس پر امتناع عائد ہے جیسا کہ کسی بھی نیوکلیر معاہدہ میں ہوتا ہے اور جس کی قرارداد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں منظور کی جائے گی۔ مذاکرات کار اقوام متحدہ کی قرارداد کا ایک مسودہ تیار کررہے ہیں جس کے ذریعہ نیوکلیر سے منسلک ہتھیاروں اور بالسٹک میزائیلس پر عائد امتناع کی یکسوئی بھی کی جائے گی۔ مسٹر اراغچی نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہاکہ معاہدہ کی راہ میں صرف دو یا تین نکات ہی حائل ہیں جبکہ معاہدہ کا اصل متن بالکل تیار ہے اور صرف کچھ نکات باقی رہ گئے ہیں جن پر قائدین کو اپنا سیاسی فیصلہ سنانا ہے۔ چار منسلکات میں تحدیدات، نیوکلیر تعاون اور ایران کا نیوکلیر پروگرام کو بھی مکمل کرلیا گیا ہے جبکہ وزراء پانچویں منسلکہ پر ہنوز غور و خوض کررہے ہیں تاکہ نظام الاوقات کا تعین کیا جاسکے۔ مسٹر اراغچی نے کہاکہ ایران کسی بھی مقررہ مدت پر عمل آوری نہیں کررہا ہے بلکہ ویانا میں زیادہ سے زیادہ توقف کرنے کو ہی ترجیح دے رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT