Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں حملہ، جمہوریت پر بدنما داغ

اسمبلی میں حملہ، جمہوریت پر بدنما داغ

ویڈیو کلپنگ منظرعام پر لانے کا مطالبہ، کانگریس رکن اسمبلی ڈی کے ارونا کا ردعمل

ویڈیو کلپنگ منظرعام پر لانے کا مطالبہ، کانگریس رکن اسمبلی ڈی کے ارونا کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 7 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ کانگریس لیجسلیچر پارٹی نے اسمبلی میں حملے کو جمہوریت پر بدنما داغ قرار دیتے ہوئے اسپیکر اسمبلی کو اس واقعہ کی ویڈیو کلپنگ کو منظرعام پر لانے کا مطالبہ کیا۔ اسمبلی کے میڈیا پوائنٹ پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر ڈی کے ارونا نے کہا کہ کانگریس کے ارکان پارٹی سے انحراف کرنے والے ارکان کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے جمہوری انداز میں احتجاج کررہے تھے لیکن مارشلس کا رویہ تکلیف دہ تھا اور ٹی آر ایس کے ارکان نے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا ہے۔ ایوان اسمبلی میں تقریباً 100 مارشلس تھے باوجود اس کے ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی نے مارشلس کا رول ادا کرتے ہوئے حملہ کیا ہے۔ کانگریس پارٹی کو اسمبلی میں ایسے حالت کی کبھی توقع نہیں تھی۔ ٹی آر ایس حکومت عوامی مسائل حل کرنے کے معاملے میں پوری طرح ناکام ہوگئی ہے۔ چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ یہ سمجھ رہے ہیں کہ عوام نے انہیں مستقل طور پر اقتدار حوالے کیا ہے۔ ہندوستان ایک جمہوری نظام کا حامل ملک ہے۔ آئندہ 5 سال بعد ٹی آر ایس کو عوام سے رجوع ہونا ہے۔ لہٰذا ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں عوام سے جو وعدے کئے گئے ہیں اس کو پورا کرنے کی حکومت کوشش کرے ورنہ عوام انہیں ہرگز معاف نہیں کرے گی۔ چیف منسٹر عوام سے کئے گئے وعدوں کو پورا کرنے کے بجائے دوسری جماعتوں سے کامیاب ہونے والے ارکان اسمبلی، ارکان قانون ساز کونسل کو اپنی جماعت میں شامل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ ٹی آر ایس ایوان میں اپنی عددی طاقت کا بیجا استعمال کرتے ہوئے غنڈہ گردی پر اتر آئی ہے۔ اسپیکر اسمبلی سے کانگریس پارٹی مطالبہ کرتی ہیکہ وہ اس واقعہ سے متعلق ویڈیو فوٹیج منظرعام پر لائیں۔ اگر ٹی آر ایس کو من مانی کرنا ہے تو اسمبلی اجلاس کیوں طلب کررہی ہے۔ جمہوریت میں غیراخلاقی حرکتوں کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے۔ کانگریس پارٹی اسمبلی کو پلیٹ فارم بناتے ہوئے عوامی مسائل کو موضوع بحث بنائے گی۔ مسائل کی یکسوئی کے معاملے میں اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT