Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں کھمم کے رکن اسمبلی رام ریڈی وینکٹ ریڈی کو خراج

اسمبلی میں کھمم کے رکن اسمبلی رام ریڈی وینکٹ ریڈی کو خراج

چیف منسٹر کا ارکان خاندان سے اظہار تعزیت، قرارداد کی پیشکشی
حیدرآباد۔/11مارچ، ( سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز اسمبلی میں آج کانگریس کے رکن اسمبلی رام ریڈی وینکٹ ریڈی کو خراج عقیدت پیش کیا گیا جن کا گزشتہ دنوں انتقال ہوگیا تھا۔ اسمبلی کی کارروائی کے آغاز کے ساتھ ہی چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے رام ریڈی وینکٹ ریڈی کے انتقال پر تعزیتی قرارداد پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ ضلع کھمم کے پالیرو اسمبلی حلقہ کی نمائندگی کرنے والے وینکٹ ریڈی پانچ مرتبہ اسمبلی کیلئے منتخب ہوئے اور عوامی مسائل کی یکسوئی میں اہم رول ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ 1944 میں وینکٹ ریڈی کا جنم ہوا اور سرپنچ کی حیثیت سے انہوں نے اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز کیا۔ وائی ایس راج شیکھر ریڈی، کے روشیا اور کرن کمار ریڈی وزارتوں میں وہ شامل رہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ زراعت اور افزائش مویشیاں میں وینکٹ ریڈی کو خصوصی دلچسپی تھی اور انہیں کئی ایوارڈز بھی حاصل ہوئے۔ چیف منسٹر نے بتایا کہ کینسر جیسے موذی مرض کا شکار ہونے کے بعد وینکٹ ریڈی نے علاج کیلئے رقمی منظوری کی خواہش کی جس پر انہوں نے 84لاکھ روپئے کی منظوری دی تھی لیکن علاج کے دوران ہی ان کا انتقال ہوگیا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ وینکٹ ریڈی کا انتقال ضلع کھمم کے عوام کیلئے کافی نقصان ہے۔ کے سی آر نے وینکٹ ریڈی کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے پسماندگان سے اظہار تعزیت کیا۔ قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی نے کہا کہ آنجہانی وینکٹ ریڈی 30سالہ عوامی خدمات کا ریکارڈ رکھتے ہیں اور آخری سانس تک عوامی خدمت کا جذبہ برقرار رہا۔ جانا ریڈی نے کہا کہ اسٹوڈنٹ لیڈر کی حیثیت سے وینکٹ ریڈی نے عوام میں اپنی شناخت بنائی اور اپنے گاؤں کے سرپنچ بھی رہے۔ کھمم ضلع میں مختلف سیاسی عہدوں پر فائز رہے۔ دیہی علاقوں کی ترقی اور زراعت کے فروغ میں انہیں خصوصی دلچسپی تھی۔ گزشتہ تین چار سال سے وہ بیمار رہے لیکن مرض کا انہوں نے بھرپور مقابلہ کیا۔ ریاستی وزیر ٹی ناگیشورراؤ جن کا تعلق کھمم سے ہے وینکٹ ریڈی کو خراج پیش کرتے ہوئے کہا کہ کھمم کی سیاست میں آنجہانی قائد کا اہم رول رہا۔ کمیونسٹ پارٹی کے سینئر قائد رجب علی کے انتقال کے بعد حلقہ اسمبلی شجاعت نگر کے ضمنی انتخاب میں پہلی مرتبہ وینکٹ ریڈی کامیاب ہوئے بعد میں اسمبلی حلقوں کی زمرہ بندی میں یہ حلقہ پالیرو میں تبدیل ہوگیا۔ ناگیشور راؤ نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی سے سیاسی کیریئر کا آغاز کرتے ہوئے وینکٹ ریڈی نے درج فہرست قبائل کی ترقی میں اہم رول ادا کیا۔ کانگریس کے رکن پواڈا اجئے نے برسراقتدار ٹی آر ایس اور دیگر اپوزیشن جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ پالیرو حلقہ کے ضمنی انتخابات میں وینکٹ ریڈی کے خاندان کے کسی فرد کے متفقہ انتخاب کو یقینی بنائیں۔ کانگریس پارٹی کسی فرد خاندان کو ٹکٹ دے گی اور دیگر جماعتوں کو اپنے امیدوار کھڑا کئے بغیر تائید کرنی چاہیئے جو کہ آنجہانی قائد کو حقیقی خراج ہوگا۔ انہوں نے زراعت اور انیمل ہسبنڈری سے متعلق ریسرچ سنٹر کے قیام اور اسے وینکٹ ریڈی کے نام سے موسوم کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔ تعزیتی قرارداد کی تائید میں جن ارکان نے اظہار خیال کیا ان میں ریڈیا نائیک، ڈاکٹر جے گیتا ریڈی، جلگم وینکٹ راؤ، وینکٹ ویریا، ڈاکٹر لکشمن، مدن لال، ڈاکٹر جی چناریڈی، وینکٹیشورلو، ایس راجیا، رویندر کمار، ڈی کے ارونا، بھٹی وکرامارکا اور دوسرے شامل ہیں۔ اسپیکر اسمبلی ایس مدھوسدن چاری نے تعزیتی قرارداد پیش کی اور دو منٹ کی خاموشی منائی گئی۔ اسمبلی اجلاس کو ہفتہ تک کیلئے ملتوی کردیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT