Saturday , April 21 2018
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں کے سی آر کی فصیح اُردو زبان دانی‘ حیدرآباد کی گنگا جمنی تہذیب کا تذکرہ

اسمبلی میں کے سی آر کی فصیح اُردو زبان دانی‘ حیدرآباد کی گنگا جمنی تہذیب کا تذکرہ

حیدرآباد ۔9 نومبر (سیاست نیوز) تلنگانہ میں ہر پارٹی کو مسلمانوں کی ضرورت ہے اور حیدرآباد کی گنگا جمنی تہذیب دنیا بھر میں مثالی ہے۔ تلنگانہ کی منفرد تاریخ کے نتیجہ میں تمام طبقات ایک دوسرے کا احترام کرتے ہیں۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے آج اسمبلی میں مباحث کا جواب دیتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ 700 برس تک مسلمانوں نے حیدرآباد پر حکمرانی کی اور اس مدت میں ایک بھی فساد نہیں ہوا۔ تلنگانہ تہذیب کا حصہ ہے کہ ہر مذہب ایک دوسرے کا تہوار جوش و خروش سے مناتا ہے ۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے انتہائی فصیح اردو میں اسمبلی سے خطاب کیا ۔ چندر شیکھر راؤ چونکہ اردو داں ہیں، انہوں نے اپنی تقریر کے ذریعہ حیدرآبادی تہذیب و روایات کی بھرپور ترجمانی کی۔ انہوں نے کہا کہ ہر اسمبلی حلقہ میں مسلمانوں کی تعداد خاطر خواہ ہے، لہذا ہر پارٹی مسلمانوں کے حق میں اظہار خیال کر رہی ہے۔ حیدرآباد کی گنگا جمنی تہذیب کو مزید فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مثال پیش کی کہ مجلس نے مندروں کی اراضی ، بی جے پی نے ائمہ اور مؤذنین اور کمیونسٹ پارٹی نے بھدرا چلم مندر کا مسئلہ اٹھایا ۔ یہ باہمی اتحاد و یکجہتی کی علامت ہے اور وہ دعا گو ہیں کہ یہ یکجہتی قائم و دائم رہے۔

TOPPOPULARRECENT