Thursday , May 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی و پارلیمانی انتخابات میں سی پی آئی ایم کی کانگریس و ٹی آر ایس سے دوری

اسمبلی و پارلیمانی انتخابات میں سی پی آئی ایم کی کانگریس و ٹی آر ایس سے دوری

تلگودیشم کی رضامندی پر اتحادممکن، ٹی ویرابھدرم سکریٹری پارٹی کا بیان

حیدرآباد ۔ 10 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ ریاستی سی پی آئی ایم کمیٹی نے آئندہ منعقد ہونے والے اسمبلی و لوک سبھا عام انتخابات میں کانگریس پارٹی اور تلنگانہ راشٹرا سمیتی (ٹی آر ایس) سے دوری کو برقرار رکھتے ہوئے اگر تلگودیشم پارٹی سی پی آئی ایم سے مل کر آنے کی صورت میں متحدہ طور پر آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جاریہ سال ماہ ڈسمبر میں ہی انتخابات منعقد ہونے کو پیش نظر رکھتے ہوئے انتخابات کیلئے ابھی سے تیاریوں کا آغاز کردینے کی سکریٹری ریاستی سی پی آئی ایم کمیٹی تلنگانہ مسٹر ٹی ویرابھدرم نے پارٹی قائدین کو ہدایات دیں۔ انہوں نے متحدہ ضلع نلگنڈہ کے سی پی آئی ایم قائدین سے نلگنڈہ میں خطاب کرتے ہوئے مذکورہ بات کہی اور اس موقع پر مسٹر ٹی ویرابھدرم نے ریاست میں عام انتخابات، اہم سیاسی جماعتوں، بہوجن لیفٹ فرنٹ (بی ایل ایف) و دیگر اہم موضوعات پر نہ صرف اظہارخیال کیا بلکہ سی پی آئی ایم قائدین کے ساتھ تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے کہا کہ بہوجن لیفٹ فرنٹ کو سال 2019ء کے عام انتخابات میں زیادہ سے زیادہ ووٹ حاصل کرنے کیلئے کوشش کی جانی چاہئے کیونکہ سال 2024ء میں منعقد ہونے والے عام انتخابات تک بی ایل ایف (بہوجن لیفٹ فرنٹ) ایک انتہائی طاقتور سیاسی متبادل کے طور پر ابھرنے کیلئے ایکشن پلان تیار کئے جانے کا مسٹر ٹی ویرابھدرم نے اظہار کیا اور بتایا کہ آئندہ عام انتخابات میں بہوجن لیفٹ فرنٹ ریاست تلنگانہ کے 119 حلقہ جات اسمبلی سے مقابلہ کرے گا اور کم از کم 30 حلقہ جات اسمبلی میں بہرصورت دوسرا مقام حاصل کیا جائے گا اور ماباقی تمام حلقہ جات اسمبلی میں کم از کم 5 ہزار سے زائد ووٹ حاصل کرنے کی کوشش کی جائے گی اور اس سلسلہ میں ایک جامع حکمت عملی مرتب کی گئی ہے۔ مسٹر ٹی ویرابھدرم نے مزید بتایا کہ آئندہ ماہ 17 اپریل کو حیدرآباد میں بی ایل ایف (بہوجن لیفٹ فرنٹ) کے ریاستی آفس کا افتتاح کیا جائے گا اور ماہ مئی میں حلقہ جات اسمبلی کی سطح پر بہوجن لیفٹ فرنٹ کا قیام عمل میں لایا جائے گا اور پھر منڈل کی سطح پر بی ایل ایف دفاترکا قیام عمل میں لاتے ہوئے انتخابی سرگرمیوں کو شروع کرکے انتخابی عمل میں تیزی پیدا کی جائے گی۔ علاوہ ازیں ماہ مئی میں بہوجن لیفٹ فرنٹ کے اسمبلی حلقوں کی مناسبت سے امیدواروں کے ناموں کو قطعیت دے کر باقاعدہ طور پر اعلان کرنے کیلئے ایکشن پلان مرتب کیا گیا ہے۔ مسٹر ٹی ویرابھدرم نے علاقائی جماعتوں کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ علاقائی ریاستی جماعتیں موقع پرستی کا مظاہرہ کررہی ہیں۔ ریاستی سکریٹری سی پی آئی ایم کمیٹی تلنگانہ مسٹر ٹی ویرابھدرم نے دریافت کیا کہ آیا اقلیتوں و ایس ٹیز کیلئے تحفظات کا مطالبہ کرنے والے مسٹر کے چندرشیکھر راؤ، ریاست تلنگانہ میں پائے جانے والے 119 ارکان اسمبلی کی نشستوں میں 50 فیصد نشستیں ریاست میں پسماندہ طبقات کو فراہم کریں گے؟ اس کی فی الفور وضاحت کرنے کی چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے خواہش کی۔

TOPPOPULARRECENT