Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی و کونسل میں خواتین کے لیے 33 فیصد تحفظات کا مطالبہ

اسمبلی و کونسل میں خواتین کے لیے 33 فیصد تحفظات کا مطالبہ

حیدرآباد ۔ 8 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : عالمی یوم خواتین کے موقع پر آج آندھرا پردیش قانون ساز اسمبلی میں قانون ساز اداروں ( پارلیمنٹ اسمبلی و کونسلر وغیرہ ) میں خواتین کے لیے 33 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے باقاعدہ طور پر قرار داد منظور کی گئی اور یہ قرار داد مرکزی حکومت کو روانہ کی گئی ۔ قبل ازیں آندھرا پردیش قانون ساز اسمبلی میں عالمی یوم خواتین کے سلسلہ میں مباحث ہوئے اور ان مباحث کے دوران ہر کسی نے خواتین کی ہمہ جہتی ترقی کا اظہار کیا اور کہا کہ خواتین کا ہم سب کی جانب احترام کیا جائے گا ۔ اس موقع پر اسپیکر اسمبلی آندھرا پردیش ڈاکٹر کے شیوا پرساد راؤ نے ایوان میں تمام وزراء اور ارکان اسمبلی وغیرہ کو خواتین کا احترام کرنے اور خصوصی پاس و لحاظ رکھنے کے ساتھ ساتھ ان کی ہر لحاظ سے ترقی کو یقینی بنانے میں اہم رول ادا کرنے کا حلف دلایا ۔ اسپیکر کی جانب سے ارکان اسمبلی و وزراء کو ’’ میں خواتین اور لڑکیوں کی توقعات کو پورا کرنے کے لیے پوری کوشش کروں گا ۔ میں عورت اور مرد کی یکساں قیادت کا خیر مقدم کروں گا ۔ میں معلومات رکھتے ہوئے یا معلومات نہ رکھتے ہوئے خواتین کے ساتھ برتے جانے والے امتیاز کو ختم کرنے کی پوری کوشش کروں گا اور میں مرد و عورت کو یکساں اہمیت دوں گا اس کے علاوہ میں خواتین کو برابر کا حصہ دار بنانے کی ایک نئی تہذیب کو مروج کروں گا ‘‘ جیسے کلمات کے ساتھ عہد کروایا گیا ۔ اس موقع پر چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے خواتین کو 33 فیصد تحفظات فراہم کرنے کے اپنے ارادہ کا اعادہ کرتے ہوئے مرکزی حکومت سے خواتین کے لیے 33 فیصد تحفظات تمام قانون ساز اداروں میں فراہم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایوان میں قرار داد پیش کی جس کو متفقہ طور پر منظور کیا گیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT