Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی و کونسل کی اقلیتی بہبود کمیٹی کا کل اجلاس

اسمبلی و کونسل کی اقلیتی بہبود کمیٹی کا کل اجلاس

سکریٹری فینانس کی شرکت سے معذرت خواہی، ایجنڈہ میں اوقافی امور شامل

حیدرآباد۔/26نومبر، ( سیاست نیوز) اسمبلی اور کونسل کی اقلیتی بہبود کمیٹی کا اجلاس 28 نومبر کو اسمبلی کانفرنس ہال میں منعقد ہوگا۔ کمیٹی کے صدر نشین عامر شکیل رکن اسمبلی صدارت کریں گے۔ اس اجلاس کیلئے جو ایجنڈہ تیار کیا گیاتھا ان میں سکریٹری فینانس کو اجلاس میں طلب کرنا شامل تھا تاکہ اقلیتی بہبود کے بجٹ کی عدم اجرائی کے بارے میں معلومات حاصل کی جاسکیں۔ تاہم بتایا جاتا ہے کہ سکریٹری فینانس نے اجلاس میں شرکت سے معذرت کا اظہار کیا جس کے بعد اجلاس کے ایجنڈہ میں صرف اوقافی امور شامل رہ گئے ہیں۔ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے کمشنر کو اجلاس میں مدعو کیا گیا ہے تاکہ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں سڑکوں کی توسیع کیلئے حاصل کی گئی اوقافی جائیدادوں کے معاوضہ کے سلسلہ میں بات چیت کی جاسکے۔ بتایا جاتا ہے کہ شہر میں 12 ایسی اوقافی جائیدادیں ہیں جن کی اراضی سڑکوں کی توسیع کے سلسلہ میں حاصل کی گئی جس کے تحت وقف بورڈ کو 468 کروڑ روپئے معاوضہ کی ادائیگی باقی ہے۔ اس سلسلہ میں وقف بورڈ کی جانب سے بلدیہ سے بارہا نمائندگی کی گئی لیکن بلدی حکام نے یہ کہتے ہوئے معاملہ کو ٹال دیا کہ متعلقہ اوقافی اداروں کے متولی معاوضہ کی رقم حاصل کرچکے ہیں۔ مقننہ کمیٹی اس مسئلہ کو کمشنر بلدیہ سے رجوع کرے گی اور معاوضہ کی جلد ادائیگی پر زور دیا جائے گا تاکہ یہ رقم اوقافی جائیدادوں کی ترقی پر خرچ کی جاسکے۔ جن علاقوں میں قیمتی اراضیات حاصل کی گئیں ان میں مشیرآباد، یلاریڈی گوڑہ، چادرگھاٹ، نامپلی، پنجہ گٹہ، ملے پلی، امیر پیٹ، بارکس اور سلطان بازار جیسے علاقے شامل ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ  اجلاس کے ایجنڈہ میں وقف بورڈ کے دیگر اُمور کو بھی شامل کیا گیا ہے جن میں حالیہ عرصہ میں کئے گئے تقررات، ریٹائرڈ ملازمین کی خدمات حاصل کرنا اور بعض ملازمین کو کرایہ کے حصول پر بونس کی ادائیگی شامل ہے۔ اگر کمشنر بلدیہ اجلاس میں شرکت کریں تو یقینی طور پر انہیں معاوضہ کی ادائیگی کے سلسلہ میں تیقن دینا پڑے گا۔ اس طرح مقننہ کمیٹی کا اجلاس اوقافی اُمور سے چھایا رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT