Monday , July 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / اسمبلی ہاوز کمیٹی کا دورہ ہنمکنڈہ ‘ وقف جائیدادوں کا جائزہ

اسمبلی ہاوز کمیٹی کا دورہ ہنمکنڈہ ‘ وقف جائیدادوں کا جائزہ

چیرمین شکیل عامر کو وقف پراپرٹی پروٹیکشن کمیٹی و دیگر تنظیموں کی جانب سے یادداشت

ورنگل ۔ 21؍ جنوری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع ورنگل کی اوقافی جائیدادوں کی تباہی و بربادی اور اس کی صحیح نگہداشت نہ ہونے کی وجہ سے کروڑہا روپیوں کی جائیدادیں ناجائز قبضوں کا شکار ہوچکی ہیں ۔ ریاستی وقف بورڈ اور ضلع کے اعلیٰ عہدیداران سے ماضی میں بار ہا نمائندگی کی گئی لیکن اس سلسلہ میں کوئی پیش رفت نہ ہوسکی ۔ ان حالات کو دیکھتے ہوئے حال ہی میں وقف پروٹیکشن اینڈ ڈیولپمنٹ کمیٹی کا وفد جناب زاہد علی خان ایڈیٹر سیاست سے ملاقات کرتے ہوئے تباہ شدہ اوقافی جائیدادیں اینوگنڈہ قبرستان ‘ ہنمکنڈہ چوراستہ قبرستان ‘ درگاہ احمد شاہ ہنمکنڈہ ‘ یتیم خانہ ہنمکنڈہ ‘ مسجد درگاہ زندہ بھکن عرس جاگیر‘ قبرستان سید عبداللہ رنگائی پیٹ ‘ سید جان اللہ شہید کھمم روڈ ‘ قبرستان گوری لامٹا ‘ فورٹ ورنگل ‘ درگاہ ہیرے شاہ ٹیکری ‘ چھلہ عبد النبی شاہ ‘ عاشورخانہ حسینی علم ہنمکنڈہ‘ مسجد عالمگیری چھوٹی مسجد صوبیداری کے علاوہ دیگر کئی اوقافی جائیدادوں کی رپورٹ پر مشتمل ایک عرضداشت پیش کی اس کی ایماء پر انہوں نے اسمبلی ہاوز کمیٹی چیرمین محمد عامر شکیل سے فون پر بات کی اور ورنگل کی اوقافی جائیدادوں کا دورہ کرتے ہوئے تفصیلی جائزہ لینے کو کہا ۔ اس سلسلہ میں اسمبلی ہاوز کمیٹی چیرمین عامر شکیل نے مقامی ایم ایل اے و ہاوز ممبر ڈی ونئے بھاسکر سے ربط پیدا کرتے ہوئے ہنمکنڈہ کا دورہ کیا ۔ واضح رہے کہ اینوگندڈہ قبرستان پر پیڈ پارکنگ کے آغاز پر مقامی ٹی آر ایس سینئر قائد عبدالقدوس نے شہر کے تمام فلاحی تنظیموں و معززین سے ربط پیدا کرتے ہوئے جائزہ اجلاس طلب کیا تھا جس میں اس جائیداد کے تحفظ کا فیصلہ کیا گیا ۔ عبدالقدوس نے مسلسل رکن اسمبلی سے اس ضمن میں ربط میں رہے ۔ ہاوز کمیٹی چیرمین عام شکیل نے ہنمکنڈہ چوراستہ ہزار ستون دیول کے نزدیک موجود یتیم خانہ کا تفصیلی دورہ کیا ۔ اس وقف اراضی پر بھی میونسپل کارپوریشن اپنا حق جتا رہی ہے ۔ جبکہ کورٹ وقف بورڈ کے حق میں فیصلہ دیا ہے ۔ ہنمکنڈہ النکار کے پاس موجود سروے نمبر 802 جو 19 گنٹے اراضی تھی اس میں 4 گنٹے اراضی سابق میں قبضہ ہوچکی تھی ۔ اس اراضی کو تاج دکن ویلفیر سوسائٹی نے وقف بورڈ سے کرایہ پر حاصل کی یہاں پر مسلمانوں کی فلاح و بہبود کے لئے ’’سہارا سنٹر‘‘ کی تعمیر کا بیڑا اٹھایا تاکہ اس جائیداد کا تحفظ ہوسکے ۔ اس سلسلہ میں سوسائٹی کی جانب سے تعمیری کاموں کا آغاز کیا گیا ۔ لیکن مقامی ٹی آر ایس اقلیتی قائدین رکاوٹ پیدا کرتے ہوئے یہاں پر شادی خانہ ‘ مسلم کمیونٹی ہال کی تعمیر کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔ عامر شکیل سے نمائندگی کی کہ فوری تعمیر کاموں کو روکا جائے اور تاج دکن سوسائٹی کی تعمیر کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ۔ محمد نعیم الدین ٹی آر ایس اقلیت صدر نے بتایاکہ ورنگل میں 1630قبرستان770 عاشور خانے ہیں 120 چھلہ غوث پاک موجود ہیں ۔ 13 گردوارے موجود ہیں اس موقع پر چیرمین ہاوز کمیٹی عامر شکیل سے بابا قادر علی سابق وقف بورڈ صدر ورنگل نے مطالبہ کیا کہ وقف بورڈ رتلنگانہ کو سالانہ ورنگل کی درگاہ انارم شریف سے لاکھوں روپئے ٹنڈرس سے رقم حاصل ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اس رقم سے ورنگل میں آئی ٹی آئی قائم کیا جائے اور کوچنگ سنٹر بھی چلائے جائیں ۔ عامر شکیل چیرمین تلنگانہ اسمبلی ہاوز کمیٹی کے دورہ ہنمکنڈہ کے موقع پر شیخ حمید احمد ‘ محمد حبیب الدین ‘ ایم اے جبار ‘ سید سلطان محی الدین قادری ‘ سید شرف الدین ‘ سید قدیر علی (اے آئی ایس ایف) محمد جلال الدین ‘ پرکال) سید عارف الدین صابری ‘ محمد رفیق احمد ‘ محمد صدیق بابا ‘ وقف پراپرٹی پروٹیکشن کمیٹی ورنگل کے ذمہ داران کے علاوہ محمد لیئق احمد ‘ محمد نصیرالدین ‘ محمد نور الدین ایڈوکیٹ ‘ سید عاصف حسین ‘ ڈاکٹر انیس صدیقی ‘ محمد سلیم سکریٹری تاج دکن سوسائٹی ‘ غلام اشفاق ‘ ایم اے ستار ‘ محمد کریم عرفانی فورٹ ورنگل ‘ مرزا ندیم بیگ ‘ڈاکٹر یعقوب خان ‘ ایم اے خلیل و دیگر موجود تھے ۔ واضح رہے کہ محمد عامر شکیل چیرمین ہاوز کمیٹی کے دورہ ہنمکنڈہ پر احمد خان سابق وقف بورڈ صدر ضلع ورنگل و مقامی ٹی آر ایس قائدین کے بیچ بحث و تکرار ہوئی سرکٹ گیسٹ ہاوز ہنمکنڈہ میں عامر شکیل کے آنے کے بعد سب ملاقات کر رہے تھے جن میں احمد خان نے استقبال کے لئے اور ملاقات کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کے بارے میں کرنا چاہئے جیسے ہی احمد خان نے بات کا آغاز کیا مقامی ٹی آر ایس قائدین نے ہنگامہ برپا کیا۔ ایم ایل اے ڈی ونئے بھاکر نے تمام کو خاموش کروایا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT