Sunday , November 18 2018
Home / کھیل کی خبریں / اسمتھ، وارنر پر ایک سال اور بین کرافٹ پر 9 ماہ کی پابندی

اسمتھ، وارنر پر ایک سال اور بین کرافٹ پر 9 ماہ کی پابندی

سڈنی۔28 مارچ (سیاست ڈاٹ کام )آسٹریلیائی کرکٹ بورڈ نے بال ٹیمپرنگ معاملے پر کپتان اسٹیو اسمتھ اور نائب کپتان ڈیوڈ وارنر پر ایک سال کی پابندی عائد کردی ہے۔ رپورٹ کے مطابق جنوبی افریقہ کے خلاف تیسرے ٹسٹ کے دوران بال ٹیمپرنگ کرنے والے کیمرون بین کرافٹ پر 9 ماہ کی پابندی عائد کردی گئی۔ آسٹریلیائی کھلاڑی اس پابندی کے خلاف ایک آزاد کمشنر کے ذریعہ اپیل کا اختیار رکھتے ہیں، جو اس بات کا فیصلہ کرنے کا بھی مجاز ہوگا کہ اس سماعت کو خفیہ رکھا جائے یا پھر منظر عام پر لایا جائے۔خیال رہے کہ 24 مارچ کو آسٹریلیا کی کرکٹ ٹیم کے کپتان اسٹیون اسمتھ نے جنوبی افریقہ کے خلاف رواں ٹسٹ سیریز کے تیسرے میچ میں ناکامی سے بچنے کے لئے منصوبہ بندی کے تحت بال ٹیمپرنگ کرنے کا اعتراف کیا تھا۔آسٹریلیائی ٹیم نے سیریز کے تیسرے میچ میں جنوبی افریقہ کے خلاف ممکنہ شکست کے پیش نظر گیند کو خراب کرنے کے لیے کیمرون بینکرافٹ کو ذمہ داری دی تھی جنھوں نے تیسرے دن پیلے رنگ کی چیز سے منصوبے پر عمل کیا لیکن انھیں کیمروں کی مدد سے پکڑ لیا گیا۔آسٹریلیا کے کپتان اسٹیون اسمتھ نے گیند کو منصوبہ بندی کے ساتھ خراب کرنے کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم کے سنیئر گروپ کو معلوم تھا اور ہم نے کھانے کے وقفے میں اس حوالے سے بات کی تھی لیکن مجھے اس واقعہ پر فخر نہیں ہے جو گیم کی روح کے عین مطابق نہیں ہے۔

تاہم اسمتھ نے اس منصوبہ بندی میں شامل دیگر سینئر کھلاڑیوں کے نام نہیں بتائے۔ واقعہ کے ایک دن بعد ہی کرکٹ آسٹریلیا نے اسٹیو اسمتھ اور ڈیوڈ وارنر کو بال ٹیمپرنگ معاملے کے بعد بالترتیب کپتانی اور نائب کپتانی سے ہٹا دیا تھا۔27 مارچ کو کرکٹ آسٹریلیا نے بال ٹیمپرنگ اسکینڈل کے تینوں مرکزی کردار کپتان اسٹیون اسمتھ، نائب کپتان ڈیوڈ وارنر اور اوپنر کیمرون بین کرافٹ کو فوری طور پر معطل کر کے وطن واپس بلا کر ٹم پین کو ٹیم کا کپتان مقرر کردیا تھا۔آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کے درمیان کیپ ٹاؤن میں کھیلے گئے تیسرے ٹسٹ میچ کے دوران آئی سی سی کے قوانین کے خلاف بین کرافٹ پیلے رنگ کے ٹیپ سے گیند کو رگڑتے ہوئے پکڑے گئے تھے۔بعدازاں کپتان اسٹیون اسمتھ نے بال ٹیمپرنگ کا اقرار کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ ہماری ٹیم کی قیادت کا منصوبہ تھا۔اس واقعہ پر آسٹریلیائی ٹیم کو دنیا بھر سے سمیت اپنے ملک سے بھی شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور یہاں تک کہ آسٹریلیائی وزیر اعظم نے اسمتھ کو فوری طور پر قیادت سے ہٹانے کا حکم جاری کیا تھا۔اسمتھ کو ٹسٹ میچ کے دوران ہی قیادت سے ہٹا کر وکٹ کیپر ٹم پین کو یہ ذمے داری سونپ دی گئی تھی۔اس واقعہ کے بعد کوچ ڈیرن لہیمن پر بھی برطرفی کی تلوار لٹکنے لگی تھی لیکن بورڈ نے انہیں کوچ کے عہدے پر برقرار رکھا۔کرکٹ آسٹریلیا نے اسمتھ کی جگہ ٹم پین کو کپتان مقرر کرنے کا بھی اعلان کردیا ہے جو آسٹریلیائی ٹیم کے 46ویں کپتان ہیں۔جیمز سدرلینڈ نے کہا کہ میں کرکٹ آسٹریلیا کے شائقین کا غصہ اور مایوسی سمجھ سکتا ہوں، آسٹریلیائی کرکٹ کی طرف سے میں تمام آسٹریلیا کے عوام سے معافی مانگتا ہوں اور میں ساتھ کرکٹ جنوبی افریقہ اور جنوبی افریقہ کے عوام سے بھی اس سیریز میں ہونے والے وقعات پر معافی مانگتا ہوں جس نے ایک شاندار سیریز کو داغ دارکردیا۔واضح رہے کہ اس سیریز میں آسٹریلیا کو 2-1 کے خسارے کا سامنا ہے اور انہیں 50 سال میں پہلی مرتبہ جنوبی افریقہ میں سیریز شکست کا خطرہ درپیش ہے۔

TOPPOPULARRECENT