Saturday , November 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / اسپاٹ فکسنگ : سزا یافتہ کرکٹرزکے مستقبل کا فیصلہ پاکستانی قوم کے سپرد

اسپاٹ فکسنگ : سزا یافتہ کرکٹرزکے مستقبل کا فیصلہ پاکستانی قوم کے سپرد

اسلام آباد ، 14 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کرکٹ بورڈ نے اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ محمد عامر، سلمان بٹ اورمحمد آصف کو پاکستانی ٹیم میں دوبارہ کھیلنے کی اجازت دینے کے حوالے سے سروے کرانے کا فیصلہ کرلیا جس میں ملک بھر کے اسپورٹس کلبوں اورعام لوگوں سے رائے لی جائے گی۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی نے فیصلہ کیا ہے کہ تینوں کھلاڑیوں کے بارے میں خود کچھ کرنے کے بجائے فیصلہ قوم پر چھوڑ دیا جائے۔ امکان ہے کہ یہ سروے عید کے بعد کرایا جائے گا اور اس کیلئے ایک نمونہ جاری کیا جائے گاجس کا مقصد سروے کو ریکارڈ کی شکل دینا ہے تاکہ سروے کے نتیجے پر کوئی شخص شک نہ کرسکے۔سلمان بٹ اور محمد آصف رواں ماہ 2 سپٹمبر کو آئی سی سی کی جانب سے لگائی گئی پانچ سالہ پابندی سے آزاد ہو ئے ہیں جبکہ محمد عامر کے اچھے رویہ کی وجہ سے انہیں چھ ماہ قبل ہی ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے کی اجازت دیدی گئی تھی۔ آئی سی سی کی جانب سے اجازت ملنے کے بعد تینوں کھلاڑی کسی بھی سطح پر کرکٹ کھیل سکتے ہیں مگر اس کیلئے انہیں پی سی بی کی جانب سے اجازت ملنا ضروری ہے ۔ کرکٹ کو کرپشن سے پاک کرنے کیلئے پی سی بی نے ایک پروگرام ترتیب دے رکھا ہے جس پر عمل کر کے سزایافتہ کھلاڑی دوبارہ کرکٹ کھیل سکتے ہیں۔محمد عامر نے پابندی اٹھنے کے بعد اس پروگرام پر مکمل عمل کیا جس کے باعث وہ اب ڈومیسٹک کرکٹ کھیل رہے ہیں۔ سلمان بٹ اور محمد آصف کو بھی اس پروگرام پر عمل کرنے کا کہا گیا ہے اور پی سی بی کی ہدایت کے مطابق انہیں پہلے کلب کرکٹ کھیلنا ہو گا جس کے بعد ان کی ڈومیسٹک کرکٹ میں واپسی ہو گی۔ سابق کرکٹرز اور عوام کی جانب سے ان کھلاڑیوں کے مستقبل کے حوالے سے مختلف آرا ء سامنے آرہی ہیں۔ کچھ لوگو ں کاکہنا ہے کہ تینوں کو نیشنل ٹیم میں کبھی بھی شامل نہیں کر نا چاہئے جبکہ بعض افراد کے مطابق اسپاٹ فکسرز اپنے جرم کی سزا کاٹ چکے ہیں ،اس لئے انہیں کھیلنے کی اجازت دے دینا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT