Wednesday , December 12 2018

اسپیشل آفیسر وقف بورڈ شیخ محمد اقبال کی میعاد آج ختم

نئے عہدیدار کے تقرر یا موجودہ آفیسر کی میعاد میں توسیع کا ہنوز کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا

نئے عہدیدار کے تقرر یا موجودہ آفیسر کی میعاد میں توسیع کا ہنوز کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا
حیدرآباد۔/17جون، ( سیاست نیوز) اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کی حیثیث سے جناب شیخ محمد اقبال ( آئی پی ایس) کی میعاد کل 18جون کو ختم ہوجائے گی تاہم تلنگانہ حکومت نے نئے اسپیشل آفیسر کے تقرر یا پھر موجودہ اسپیشل آفیسر کی میعاد میں توسیع کے بارے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ متعلقہ فائیل حکومت کے زیر غور ہے تاہم اس کی فوری یکسوئی کا کوئی امکان نہیں۔ اس طرح جناب شیخ محمد اقبال کی میعاد کی تکمیل کے ساتھ ہی وقف بورڈ کے نئے اسپیشل آفیسر کے عدم تقرر کے باعث وقف بورڈ کی کارکردگی کے بارے میں مختلف اندیشوں کا اظہار کیا جارہا ہے۔ واضح رہے کہ آندھرا پردیش کی دو ریاستوں میں تقسیم کے باوجود وقف بورڈ کی تقسیم کا عمل مکمل نہیں ہوا، اور وقف بورڈ کو اُن اداروں کی فہرست میں شامل کیا گیا جن کی تقسیم 2جون کے بعد کی جائے گی۔ وقف بورڈ کی عدم تقسیم اور دونوں ریاستوں میں علحدہ بورڈز کی تشکیل میں امکانی تاخیر اور تکنیکی دشواریوں کو دیکھتے ہوئے اسپیشل سکریٹری اقلیتی بہبود جناب سید عمر جلیل نے حکومت کو تجویز پیش کی تھی کہ وہ موجودہ اسپیشل آفیسر کی میعاد میں مزید چھ ماہ یا پھر نئے بورڈ کی تشکیل تک توسیع کرے۔ اس سلسلہ میں فائیل انچارج پرنسپل سکریٹری اقلیتی بہبود ٹی رادھا کو روانہ کی گئی تاہم بتایا جاتا ہے کہ یہ فائیل ابھی تک چیف منسٹر کے پاس نہیں پہنچی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق فائیل ابھی چیف سکریٹری کے پاس زیر التواء ہے اور چیف سکریٹری نے اس فائیل پر ابھی تک اپنی رائے کا اظہار نہیں کیا، وہ اپنی تجاویز کے ساتھ فائیل کو چیف منسٹر سے رجوع کریں گے۔حکومت نے جناب شیخ محمد اقبال کو چھ ماہ کیلئے اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کی حیثیت سے مقرر کیا تھا اور اس مدت کے دوران انہوں نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں کئی اہم قدم اٹھاتے ہوئے اقلیتوں کی بھرپور حمایت حاصل کی۔ اب جبکہ ان کی میعاد ختم ہورہی ہے وقف بورڈ کی کارکردگی کے بارے میں اقلیتوں میں مختلف اندیشوں کا اظہار کیا جارہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ شہر کی مقامی جماعت اسپیشل سکریٹری اقلیتی بہبود اور اسپیشل آفیسر وقف بورڈ کے عہدوں پر موجودہ عہدیداروں کی برقراری کے حق میں نہیں ہے اور اس سلسلہ میں پارٹی نے چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ سے نمائندگی بھی کی۔ دوسری طرف اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کا وعدہ کرنے والے چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ اسپیشل آفیسر کی تبدیلی کے سلسلہ میں تذبذب کا شکار ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر، شیخ محمد اقبال کو توسیع دینے کے حق میں ہیں تاہم حلیف جماعت کی مخالفت کے باعث وہ فیصلہ کرنے میں پس و پیش کررہے ہیں۔ رمضان کے انتظامات سے متعلق کل کے جائزہ اجلاس میں بھی مقامی جماعت کے قائد نے اسپیشل آفیسر کی فوری تبدیلی کا مطالبہ کیا تھا۔ اسی دوران سرکاری ذرائع نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے نئے اسپیشل آفیسر کے تقرر تک شیخ محمد اقبال کیلئے اس عہدہ کی ذمہ داری حوالے کرنے کا مسئلہ برقرار رہے گا، وہ چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ کو اس عہدہ کی ذمہ داری نہیں دے سکتے کیونکہ وہ اس عہدہ کیلئے مطلوب رینک کے آفیسر نہیں ہیں۔ ایک اور ذرائع نے بتایا کہ نئی پوسٹنگ تک شیخ محمد اقبال اس عہدہ پر برقرار رہ سکتے ہیں تاہم وہ اسپیشل آفیسر کے اختیارات کا استعمال نہیں کریں گے۔چونکہ شیخ محمد اقبال تلنگانہ اور آندھرا پردیش ریاستوں کے اوقافی اُمور کے انچارج ہیں لہذا تلنگانہ حکومت کی جانب سے تلنگانہ ریاست کیلئے اسپیشل آفیسر کے تقرر کی صورت میں وہ آندھرا پردیش کے اُمور انجام دے سکتے ہیں۔ امکان ہے کہ حکومت جلد ہی اس تعطل کے خاتمہ کیلئے کوئی قدم اٹھائے گی۔

TOPPOPULARRECENT