Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اسکالر شپس اسکام ، تحقیقات کرانے کا خیر مقدم

اسکالر شپس اسکام ، تحقیقات کرانے کا خیر مقدم

تعلیم کو تجارت میں تبدیل کرنے کی کوشش افسوسناک ، یونس سلطان کا بیان
حیدرآباد ۔ 19 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : صدر نشین پائینر ایجوکیشنل انسٹی ٹیوٹ و سابق رکن اسمبلی مسٹر یونس سلطان نے اسکالر شپس اسکام کی روک تھام کے لیے پولیس اور ویجلنس عہدیداروں کے ساتھ تعلیمی اداروں کی تحقیقات کرانے کا خیر مقدم کیا ۔ مسٹر یونس سلطان نے کہا کہ وہ گذشتہ 25 سال سے تلنگانہ کے پسماندہ ضلع کھمم میں لا ، ایم بی اے اور انجینئرنگ کالجس چلا رہے ہیں وہ جانتے ہیں کہ غیر قانونی طریقہ سے پیسے کمانے والے چند افراد تعلیمی ادارے شروع کرتے ہوئے تعلیم کو تجارت میں تبدیل کردیا ہے ۔ ان کے پاس معیار تعلیم کا کوئی پیمانہ نہیں ہے اور نہ ہی طلبہ کے روشن مستقبل کی کوئی فکر ہے ۔ صرف آمدنی ان کا مقصد ہے وہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر سے اظہار تشکر کرتے ہیں جنہوں نے تعلیم کو طلبہ کا زیور بنانے کا فیصلہ کرتے ہوئے ٹھوس اقدامات کررہے ہیں ۔ عوام کا پیسہ ضائع ہونے سے بچانے طلبہ کو معیاری تعلیم فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ تعلیمی اداروں میں مناسب انفراسٹرکچر اور اساتذہ کی موجودگی کا جائزہ لے رہے ہیں ۔ اسکالر شپس اسکام کو روکنے کے لیے عملی اقدامات کررہے ہیں جس کا وہ خیر مقدم کرتے ہیں ۔ ان تعلیمی اداروں کو اس تحقیقات پر اعتراض ہے جو گول مال کرتے ہیں حکومت پر دباؤ بنانے کے لیے خانگی تعلیمی اداروں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے تعلیمی ادارے بند منانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس کی وہ مخالفت کرتے ہیں جن کے دل میں چور ہے  بے قاعدگیوں اور بدعنوانیوں میں ملوث ہیں وہی تحقیقات کی مخالفت کررہے ہیں ۔ مسٹر یونس سلطان نے کہا کہ اسکالر شپس اسکام کا گذشتہ 10 سال قبل ہی آغاز ہوا ہے ۔ ضلع کھمم کی بے قاعدگیوں کے تعلق سے وہ شکایت بھی کرچکے ہیں پولیس نے چند تعلیمی اداروں کے خلاف مقدمات بھی درج کئے ہیں تاہم کانگریس حکومت نے غلطی کرنے والے تعلیمی اداروں کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے ان کی ڈھال بن گئی تھی جس کی وجہ سے ان کے حوصلے بلند ہوگئے تھے تاہم چیف منسٹر کے سی آر نے نئی ریاست تلنگانہ میں تعلیمی معیار کو اونچا کرنے اور اسکالر شپس اسکام کو روکنے کے لیے جو کارروائی کا آغاز کیا ہے وہ قابل ستائش ہے جس کی وہ بھر پور تائید کرتے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT