Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / اسکولس ‘ دواخانوں و بازاروں کو بلدیہ کی جانب سے ایوارڈز

اسکولس ‘ دواخانوں و بازاروں کو بلدیہ کی جانب سے ایوارڈز

صفائی کی بنیاد پر انتخاب عمل میں لایا جائیگا ۔ خانگی دواخانوں اور اسکولس کو بھی شامل کیا جائے گا
حیدرآباد۔26ستمبر(سیاست نیوز) شہری حدود میں موجود اسکولوں ‘ دواخانوں کے علاوہ بازاروں کو بلدیہ حیدرآباد کی جانب سے ایوارڈ دیئے جائیں گے۔ڈاکٹر جناردھن ریڈی کمشنر بلدیہ کے فیصلہ کے مطابق بلدی حدود میں موجود دواخانوں ‘ اسکولوں اور مارکٹس کو صفائی کی بنیاد پر ایوارڈس کی پیشکشی کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے تاکہ شہر میں موجود ان اداروں میں صفائی کو ممکن بنایا جاسکے۔ بتایاجاتاہے کہ بلدیہ نے ایوارڈ کے سلسلہ میں تیارکردہ منصوبہ کے تحت تمام خانگی و سرکاری دواخانوں اور اسکولوں کو شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس سلسلہ میں ازخود اپنے اداروں کا جائزہ لینے ذمہ داران کو دستاویزات حوالہ کئے گئے ہیں ۔ بلدی عہدیداروں کے مطابق دواخانوں اور اسکولوں کا جائزہ لینے علحدہ امور طئے کئے گئے ہیں جن کے ذریعہ صفائی کا جائزہ لیا جائے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ ریستوراں ‘ بازاروں‘ دواخانوں ‘ کے علاوہ اسکولوں کو علحدہ علحدہ نشانات دیئے گئے ہیں۔ شہر حیدرآباد میں صفائی کے امور کو بہتر بنانے اسکولوں و دواخانوں کے ذمہ داروں کو راغب کروانے یہ کوشش کی جا رہی ہے۔ بتایاجاتاہے کہ مجلس حیدرآباد کے حدود میں دواخانوں میں صفائی کے عمل کا جائزہ 26امور کو نظر میں رکھتے ہوئے لیا جائیگا جبکہ اسکولوں کی صفائی کا جائزہ 30امور کو مدنظر رکھتے ہوئے لیا جائے گا ۔ اسی طرح جی ایچ ایم سی کی جانب سے بازاروں کی صفائی کیلئے 10امور طئے کئے گئے ہیں اور ریستوراں کی صفائی کیلئے 13امور طئے کئے گئے ۔ ان مقامات کیلئے بلدیہ حیدرآبادنے جو نشانات مقرر کئے ہیں ان کے مطابق ریستوراں کو 150 نشانات‘ بازاروں کو 100 نشانات‘ دواخانوں کو 160نشانات اسکولوں کے لئے 150 نشانات مقرر کئے گئے ہیں جس کا جائزہ لینے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی خصوصی ٹیمیں ان مقامات کا دورہ کریں گی۔ جی ایچ ایم سی عہدیداروں کو ان اداروں کے علاوہ شہر میں خدمات انجام دے رہے سرکاری دفاتر میں صفائی کے امور کے متعلق جائزہ لینے کیلئے بھی خصوصی ٹیم کی تشکیل عمل میں لائی جانی چاہئے کیونکہ شہر میں مصروف کار سرکاری اداروں میں جہاں عوام کی بڑی تعداد پہنچتی ہے وہاں بنیادی سہولتیں نہ ہونے کے علاوہ صفائی کے انتظامات کی کیا صورتحال ہے اس کا جائزہ لیا جائے اور ان سرکاری اداروں میں صفائی کی بنیادی سہولتوں کی فراہمی کو ممکن بنایا جائے جہاں صفائی کے انتظامات انتہائی ناقص ہیں۔

TOPPOPULARRECENT