Friday , April 27 2018
Home / شہر کی خبریں / اسکولس کیساتھ عوامی نمائندوں اور وزراء کے پاس خدمات انجام دینے والے اساتذہ کی رپورٹ

اسکولس کیساتھ عوامی نمائندوں اور وزراء کے پاس خدمات انجام دینے والے اساتذہ کی رپورٹ

محکمہ میں برقراری یا علیحدگی پر عمل کی تجویز، محکمہ تعلیمات سے تفصیلات اکٹھا کرنے کا آغاز

حیدرآباد۔4فروری(سیاست نیوز) محکمہ تعلیم نے سرکاری اسکولوںمیں خدمات انجام دیتے ہوئے منتخبہ عوامی نمائندوں یا وزراء کے پاس خدمات انجام دینے والے اساتذہ کی رپورٹ تیار کرنے کا عمل شروع کردیا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ محکمہ تعلیم نے ریاست میں سرکاری اسکولوں میں خدمات انجام دینے والے اساتذہ جو کہ منتخبہ عوامی نمائندوں یا وزراء کے پاس ان کے مددگار کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں ان کی تفصیلات حاصل کرنی شروع کی ہیں تاکہ ان کی خدمات کو محکمہ سے علحدہ کیا جاسکے یا پھر انہیں محکمہ میں خدمات کی انجام دہی کو یقینی بنانے کا پابند بنایاجاسکے۔ محکمہ تعلیم کے عہدیداروں نے بتایا کہ سپریم کورٹ کے احکام کے بعد ریاست کے مختلف مقامات پر خدمات انجام دینے والے اساتذہ کو واپس طلب کرلیا گیا ہے لیکن اس کے باوجود بعض اساتذہ جو کہ غیر قانونی طور پر منتخبہ عوامی نمائندوں یا دیگر وزراء کے دفاتر میں خدمات انجام دے رہے ہیں ان کے خلاف کاروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ اس سلسلہ میں محکمہ کو موصولہ شکایات کے مطابق بعض منتخبہ عوامی نمائندوں کی جانب سے اساتذہ کی خدمات حاصل کی جا رہی ہیں اور جو اساتذہ منتخبہ عوامی نمائندوں کے دفاتر میں خدمات انجام دے رہے ہیں وہ اسکولی اوقات میں اسکول میں موجود نہیں رہتے اس بات کی شکایات موصول ہونے کے بعد محکمہ تعلیم نے ہر ضلع میں خدمات کے اوقات کے دوران غیر حاضر رہنے والے اساتذہ اور سیاسی خدمات میں مصروف اساتذہ کی تفصیلات اکٹھا کرتے ہوئے محکمہ کو روانہ کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ چند ماہ قبل ان تمام اساتذہ کی خدمات سے منتخبہ عوامی نمائندوں اور وزراء نے دستبرداری اختیار کرلی تھی اور انہیں اپنے خدمات کے مقام پر روانہ کردیا تھا لیکن اب دوبارہ ان کی خدمات حاصل کئے جانے کی شکایات موصول ہونے کے باعث محکمہ تعلیم نے اس بات کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ اب جو اساتذہ سیاسی قائدین و منتخبہ عوامی نمائندوں کے مددگار کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں وہ بالکلیہ طور پر غیر قانونی ہے اور ثابت ہونے پر ان کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔اسی لئے محکمہ تعلیم نے اسکولی اوقات میں موجود نہ رہنے والے اساتذہ کی سرگرمیوں کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اس بات کا پتہ چلایاجاسکے کہ یہ اساتذہ جو اسکولی اوقات میں موجود نہیں ہوتے ان کی سرگرمیاں کیا ہیں کیا وہ واقعی منتخبہ نمائندوں کی پیشی میں غیر قانونی طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں یا سرکاری ملازمت کی انجام دہی میں لاپرواہی کے ذریعہ کسی اور مصروفیت میں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT