Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / اسکول حادثہ کی کمسن متوفیہ کے والدین سے اظہار یگانگت

اسکول حادثہ کی کمسن متوفیہ کے والدین سے اظہار یگانگت

غیر معیاری و غیر مسلمہ اسکولس کے خلاف کارروائی کی سفارش ، جناب عابد رسول خاں چیرمین اقلیتی کمیشن کا دورہ
حیدرآباد۔20نومبر(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں بنیادی سہولتوں سے محروم خانگی اسکولس جو غیر مصدقہ ہونے کے ساتھ ساتھ محکمہ تعلیم کے قوانین کی خلاف ورزی کررہے ہیں ایسے اسکولس کو فوری بندکروانے اور اسکول انتظامیہ کے خلاف سخت اقدامات کرنے چیف منسٹر کے چندرشیکھر رائو اور ریاستی وزیرمحکمہ تعلیم کڈیم سری ہری سے موثر نمائندگی کی جائے گی۔ صدر نشین میناریٹی کمیشن ریاست تلنگانہ جناب عابد رسول خان نے شری چیتنیہ اسٹار کڈس اسکول میںلفٹ حادثہ کا شکار تین سالہ معصوم زینب فاطمہ جعفری کے پسماندگان سے ملاقات کے بعد یہ بات کہی۔ میناریٹی کمیشن ریاست تلنگانہ کے وفد نے جس میں کلکٹر حیدرآباد کے ایڈیشنل جوائنٹ کلکٹر ‘ ڈی ای کے علاوہ کمیشن کے دیگر اراکین بھی موجود تھے جنھوں نے مرحوم فاطمہ زینب کے مکان واقع امان نگر پہنچ کر پسماندگان سے ملاقات کرتے ہوئے شری چیتنیہ اسکول انتظامیہ کے خلاف سخت کاروائی کرتے ہوئے پسماندگا ن کو انصاف دلانے کا یقین دلایا۔ اس دوران پسماندگان نے بھی محکمہ اقلیتی بہبود کے ذمہ داران کو ایک تحریری یادواشت پیش کی جس میںبے بی فاطمہ زینب جعفری کی تمام تفصیلات اسکول آئی ڈی کارڈ‘ پروگرس رپورٹ ‘برتھ سرٹفیکیٹ شامل تھے۔ پسماندگان نے مزیدکہاکہ صرف ملک پیٹ علاقہ میں شری چیتنیہ اسکول کے تحت نوا س قسم کے اسکولس چلائے جارہے ہیںجہاں پر معصوم بچوں کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہے اور یہ تمام اسکولس غیر مصدقہ بھی ہیں اس کے علاوہ پسماندگان نے بے بی فاطمہ زینب جعفری کی لفٹ حادثے میںموت کے لئے بھی اسکول انتظامیہ کو ذمہ دار ٹھرایا۔ انہوں نے کہاکہ شری چیتنیہ گروپس آف ایجوکیشن کے نام پر آپسی بھائی چارہ کے فروغ کے لئے ہم اپنی معصوم بچی کا مذکورہ اسکول میںداخلہ کروایا تھا جس کے غیرمصدقہ ہونے کی اطلاع ہمیں حادثہ پیش آنے کے بعد ملی۔مرحوم زینب فاطمہ جعفری کے پسماندگان نے حکومت تلنگانہ پر انصاف کے لئے مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ حکومت اس قسم کے اسکولس پر تحدیدات عائد کرتے ہوئے ایک اور زینب فاطمہ کو لفٹ کے نیچے دب کرہلاک ہونے سے روکنے کے اقدامات کرے گی۔صدرنشین میناریٹی کمیشن جناب عابد رسول خان نے بھی اس سنگین مسئلہ پر سنجیدگی کے ساتھ نوٹ لیتے ہوئے حکومت کو واقف کروانے کا وعدہ کیااو رکہاکہ عنقریب ریاستی میناریٹی کمیشن ایک کل جماعتی اجلاس منعقد کرتے ہوئے اس سنگین مسئلہ پر حکمت عملی تیار کرتے ہوئے غیر مصدقہ ان تمام اسکولس کے خلاف کاروائی کرے گا جہاں پر معصوم بچوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کمیشن کی جانب سے محکمہ تعلیم کو گریٹر حیدرآباد کے تمام اسکولس کی تفصیلات فراہم کرنے کی ہدایت دیدی گئی ہے اور اندرون پندرہ یوم کمیشن اس سنگین مسئلہ پر موثر کاروائی کرتے ہوئے غیرمصدقہ اور بنیادی سہولتوں سے محروم تمام اسکولس کے خلاف سخت نوٹ لے گا۔

TOPPOPULARRECENT