Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / اسکیمات پر عمل آوری میں تاخیر و بے قاعدگیوں پر سخت کارروائی

اسکیمات پر عمل آوری میں تاخیر و بے قاعدگیوں پر سخت کارروائی

ورنگل اور نظام آباد ڈسٹرکٹ میناریٹی آفیسرس کے تبادلے، محکمہ اقلیتی بہبود کا اجلاس میں فیصلہ
حیدرآباد۔/21اکٹوبر، ( سیاست نیوز) اقلیتی بہبود کے عہدیداروں نے ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کو آگاہ کیا ہے کہ اگر سرکاری اسکیمات پر عمل آوری میں کوتاہی یا پھر ان کی جانب سے کسی بے قاعدگی کے بارے میں شکایات موصول ہوں تو ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ محکمہ اقلیتی بہبود نے نظام آباد اور ورنگل کے ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کی خدمات ان کے متعلقہ محکمہ جات کو واپس کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس سلسلہ میں متعلقہ ضلع کلکٹرس کو ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ ان دونوں عہدیداروں کے بارے میں محکمہ کو کئی شکایات موصول ہوئی تھیں۔ اقلیتی اسکیمات اور عہدیداروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے آج حج ہاوز میں تمام ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کا اجلاس منعقد ہوا ۔ اس اجلاس کی صدارت سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے کی جبکہ حکومت کے مشیر اقلیتی اُمور اے کے خاں، منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ، سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور، چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ ایم اے منان فاروقی اور ڈائرکٹوریٹ آف میناریٹی ویلفیر کے عہدیداروں نے شرکت کی۔ بتایا جاتا ہے کہ اے کے خاں نے ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کی کارکردگی کے بارے میں مختلف شکایات کا حوالہ دیا اور کہا کہ بعض عہدیداروں کے بارے میں کرپشن اور بعض کے رویہ کے سلسلہ میں شکایات ملی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی شکایت پر سختی سے کارروائی کی جائے گی اور کہا کہ حکومت نے اقلیتوں کی بہبود کی کیلئے جو اسکیمات شروع کی ہیں اس کے فوائد حقیقی مستحقین تک پہنچنے چاہئے۔ کسی بھی اسکیم میں اگر بے قاعدگی کی جائے گی تو اس کیلئے راست ضلعی عہدیدار کو ذمہ دار قرار دیا جائے گا۔ اے کے خاں نے نظام آباد اور ورنگل کے ضلع کلکٹرس سے ربط قائم کرتے ہوئے ان اضلاع کے اقلیتی ضلعی عہدیداروں کی خدمات واپس کرنے کی خواہش کی۔ ان کی جگہ بی سی ویلفیر آفیسر کو اقلیتی اُمور کی ذمہ داری دی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ جگتیال ضلع کے بارے میں بھی مختلف شکایات موصول ہوئی ہیں کہ وہاں عہدیدار من مانی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عہدیداروں کو اسکیمات پر عمل آوری کے سلسلہ میں سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا اور وقتاً فوقتاً کارکردگی رپورٹ روانہ کی جائے۔ اے کے خاں نے کہا کہ اسکیمات پر عمل آوری کے سلسلہ میں اگر کوئی رکاوٹ ہو تو اس کیلئے سکریٹری اقلیتی بہبود سے ربط قائم کیا جاسکتا ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے ضلعی عہدیداروں سے کہا کہ وہ ضلع کلکٹر سے ملکر مختلف اسکیمات کیلئے جاری کردہ فنڈز کے خرچ کو یقینی بنائیں کیونکہ عوام بڑی توقع کے ساتھ اقلیتی بہبود کے دفتر رجوع ہوتے ہیں لیکن انہیں عہدیداروں کے رویہ کے سبب مایوسی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے عہدیداروں کو اپنے رویہ میں تبدیلی لانے کی ہدایت دی۔ عمرجلیل نے کہا کہ چیف منسٹر نے جن اسکیمات کا آغاز کیا ہے ان پر عمل آوری عہدیدارں کی ذمہ داری ہے۔ اجلاس میں شادی مبارک، اوورسیز اسکالرشپ،ایم ایس ڈی پی، پری میٹرک اسکالر شپ، اردو گھر شادی خانوں کی تعمیر، وقف بورڈ کی گرانٹ اِن ایڈ اور اقلیتی اقامتی اسکولوں کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔ دن بھر جاری رہے اس اجلاس میں عہدیداروں نے بعض تجاویز پیش کئے جن پر غور کرنے کا تیقن دیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT