Monday , June 18 2018
Home / کھیل کی خبریں / اظہر اور عمران کے بعد ہند۔پاک ٹیمیںنئی شروعات کی خواہاں

اظہر اور عمران کے بعد ہند۔پاک ٹیمیںنئی شروعات کی خواہاں

ایڈیلیڈ۔5فبروری( سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ورلڈ کپ 2015ء کا 15فبروری کو کھیلے جانے والے مقابلہ کا دنیائے کرکٹ کو انتظار ہے ‘ جہاں دفاعی چمپئن ہندوستان کا مقابلہ کٹر حریف پاکستان سے مقرر ہے ۔ ہندوستانی ٹیم ورلڈ کپ میں 5مرتبہ پاکستان کا سامنا کرتے ہوئے صدفیصد فتوحات حاصل کی ہیں اور وہ دورۂ آسٹریلیا میں پھر ایک مرتبہ پاکستان کو شکست دیتے

ایڈیلیڈ۔5فبروری( سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ورلڈ کپ 2015ء کا 15فبروری کو کھیلے جانے والے مقابلہ کا دنیائے کرکٹ کو انتظار ہے ‘ جہاں دفاعی چمپئن ہندوستان کا مقابلہ کٹر حریف پاکستان سے مقرر ہے ۔ ہندوستانی ٹیم ورلڈ کپ میں 5مرتبہ پاکستان کا سامنا کرتے ہوئے صدفیصد فتوحات حاصل کی ہیں اور وہ دورۂ آسٹریلیا میں پھر ایک مرتبہ پاکستان کو شکست دیتے ہوئے یہاں پہلی کامیابی اور اپنے خطاب کے دفاع کی کامیاب مہم کی آغاز کی خواہاں ہیں جبکہ دوسری جانب پاکستانی ٹیم جس نے 1992ء ورلڈ کپ میں عمران خان کی قیادت میں ہندوستان کے خلاف شکست کے باوجود چمپئن ہونے کا اعزاز حاصل کیا تھا وہ بھی اس مقابلے میں کامیابی کے ذریعہ ورلڈ کپ میں حریف ٹیم کے خلاف ناکامیوں کے سلسلہ کو توڑنے کی خواہاں ہے ۔ دونوں ٹیموں کے درمیان یہ ورلڈ کپ کا چھٹا مقابلہ ہے جبکہ اتفاق سے 1992ء میں ہندوستان نے سڈنی میں 4مارچ 1992ء کو منعقدہ مقابلے میں اظہر الدین کی قیادت میں عمران کی زیرقیادت ٹیم کو 43رنز سے شکست دی تھی ۔

ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ورلڈ کپ کی تاریخ کا یہ پہلا مقابلہ تھا جس میں اظہر الدین نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا ۔ 49اوورس کے اس مقابلے میں 18سالہ نوجوان بیٹسمین سچن تنڈولکر کے 62گیندوں میں 54رنز کی بدولت اظہرالدین کی ٹیم نے 216/7 رنز اسکور کئے تھے جبکہ پاکستان کیلئے مشتاق احمد 59/3 اور عاقب جاوید 28/2 کا مظاہرہ کیا تھا ۔ وسیم اکرم نے 10اوورس میں 45رنز ‘ عمران خان نے 8اوورس میں 25رنز دیئے تھے تاہم وہ وکٹیں حاصل کرنے میں ناکام رہے تھے۔ جوابی اننگز میں پاکستانی ٹیم آغاز سے ہی جدوجہد کرتی رہی تھی صرف عامر سہیل نے 95گیندوں میں 62رنز اور جاوید میاں داد نے 110گیندوں میں 40رنز بنائے تھے ۔ اس مقابلہ کے دوران 25ویں اوور میں ناظرین کو ایک ڈرامائی نظارہ دیکھنے کو ملا تھا جب ہندوستانی وکٹ کیپر کرن مورے کی کسی بات پر ناراض تھے اور اس کی انہوں نے امپائر سے بھی شکایت کی تھی جس کی اگلی گیند پر میانداد ایک سنگل رن لینا چاہتے تھے تاہم وہ ارادہ بدل کر کریز میں لوٹے اور انہیں رن آؤٹ کرنے کیلئے مورے نے بیلس اڑا لئے تھے جس کے بعد امپائر کے ناٹ آؤٹ قرار دیئے جانے کے بعد میانداد بیاٹ دونوں ہاتھوں میں اٹھاکر چھلانگیں لگائی تھی اور اس واقعہ کو ہندوستانی مقابلوں کے دوران رونما ہونے والے تلخ مناظر میں شمار کیا جاتا ہے ۔

بعد ازاں 1996ء کے کوارٹر فائنل میں ہندوستان نے 139رنز ‘ 1999ء میں سوپر 6مرحلے میں 47رنز ‘ 2003ء ورلڈ کپ میں 6وکٹوں اور 2011ء ورلڈ کپ میں موہالی میں بھی ہندوستان نے پاکستان کو 29رنز سے شکست دے کر عالمی کپ میں اپنی فتوحات کے صدفیصد ریکارڈ کو برقرار رکھا ہے ۔ دونوں ٹیمیں اب 15فبروری 2015ء کو ایڈیلیڈ کے میدان پر چھٹی مرتبہ ایک دوسرے کے مدمقابل ہورہی ہیں اور اس مقابلہ میں ورلڈ کپ کا سب سے دلچسپ اور اہم مقابلہ تصور کیا جارہا ہے جہاں مہیندر سنگھ دھونی کی ٹیم جس کو آسٹریلیا کے خلاف ٹسٹ سیریز اور سہ رخی سیریز کے فائنل میں بھی رسائی کا موقع نہیں ملا ہے ‘ وہ ناکامیو ںکو پس پشت ڈالتے ہوئے ورلڈ کپ کا کامیاب آغاز کرنا چاہتی ہے جبکہ پاکستانی ٹیم جس کو نیوزی لینڈ کیلئے 2ونڈے مقابلوں کی سیریز میں 2-0 کی شکست برداشت کرنی پڑی ہے وہ ہندوستان کو شکست دیتے ہوئے ورلڈ کپ کا کامیاب آغاز اور 1992ء کی تاریخ دہرانے کیلئے کوشاں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT