Monday , September 24 2018
Home / ہندوستان / اعظم خاں کی انتخابی مہم پر پابندی سے ملائم سنگھ یادو پر مزید دباؤ

اعظم خاں کی انتخابی مہم پر پابندی سے ملائم سنگھ یادو پر مزید دباؤ

لکھنو ۔ 14 ۔ اپریل (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن کی جانب سے سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر ریاستی وزیر محمد اعظم خاں پر انتخابی مہم میں حصہ لینے پر پابندی لگائے جانے سماج وادی پارٹی کی انتخابی مہم کو کرارا جھٹکا لگا ہے۔ محمد اعظم خاں پارٹی کے ایک تیز طرار پر جوش مقرر مسلم لیڈر ہیں، ان کی تقاریر بسا اوقات انتخابی فصاء تبدیل کرنے میں ثابت ہوتی ہیں۔ الیکشن کمیشن نے ان پر اشتعال انگیز تقاریر کرنے کے الزام میں پابندی ایسے وقت میں لگائی ہے جب یو پی کے روبیل کھنڈ ، بریلی ، رام پور ، شاہجہانپور ، لکھیم پور ، پیلی بھیت وغیرہ ایک درجن پارلیمانی حلقوں میں 17 اپریل کو پولنگ ہونے کو ہے ان حلقوں میں مسلم رائے دہندگان کی اچھی خاصی تعداد ہے اور مسلم ووٹ ان سیٹوں پر فیصلہ کن حیثیت رکھتے ہیں۔ محم اعظم خاں پر الیکشن کمیشن کی پابندی کی وجہ سے اب ملائم سنگھ یادو پر پارٹی کی انتخابی مہم کو اور زیادہ دھاردار بنانے کی ذمہ داری آ پڑی ہے ۔ اگرچہ ملائم سنگھ یادو نے الیکشن کمیشن کو اعظم خاں کے معالے م یں نظرثانی کرنے کیلئے مکتوب میں لکھا ہے، ملائم سنگھ یادو نے محمد اعظم خاں کے بیان کو حق بجانب قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امیت شاہ اور محمدا عظم خاں کو ایک ہی صف میں کھڑا نہیں کیا جاسکتا ہے کیونکہ امیت شاہ کے ہاتھ گجرات میں مسلمانوں کے حون سے رنگے ہوئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT