Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / افغانستان میں دولت اسلامیہ کے موضوع پر روس ۔ طالبان بات چیت کی تردید

افغانستان میں دولت اسلامیہ کے موضوع پر روس ۔ طالبان بات چیت کی تردید

کابل۔27ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) طالبان نے تردید کی ہے کہ انہوں نے روس کے ساتھ دولت اسلامیہ گروپ کی افغانستان میں توسیع کا مقابلہ کرنے کے سلسلہ میں بات چیت کی ہے ۔ طالبان نے اس اطلاع کو بھی مسترد کردیا کہ افغانستان میں جہادی گروپ پر اُس کا اثر و رسوخ ہے ۔ شورش پسند سینئر روسی سفارتکار ضمیرکابلوف کے بیان پر ردعمل ظاہر کررہے تھے ۔ ضمیر نے کہا تھا کہ اُن کا ملک طالبان کے ساتھ دولت اسلامیہ کے بارے میں معلومات کا باہمی تبادلہ کررہاہے ۔ کابلوف کریملین کے خصوصی نمائندہ برائے افغانستان ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت روس نے افغان طالبان کے ساتھ دولت اسلامیہ کی توسیع کا مقابلہ کرنے کیلئے طالبان سے معلومات کا باہمی تبادلہ کیا ہے ۔ طالبان نے اپنے ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں شائع شدہ پیغام میں کہا کہ انہیں کسی سے بھی مبینہ دولت اسلامیہ سے مقابلہ کیلئے مدد حاصل کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے اور نہ انہوں نے کسی سے اس مسئلہ پر بات چیت کی ہے ۔ دولت اسلامیہ شام اور عراق کے وسیع علاقوں پر قابض ہے ۔ مشرقی افغانستان کے کئی حصوں میں اس کے جنگجو موجود ہیں اور طالبان اُن کو چیالنج کررہے ہیں ۔ حالانکہ اس بات کی علامات ظاہر ہورہی ہیں کہ افغانستان میں دولت اسلامیہ کی مقبولیت میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ ریڈیو سے دولت اسلامیہ کا پروپگنڈہ بھی ہر صبح نشر کیا جاتا ہے ۔ اب تک صرف طالبان ہی افغانستان میں حکومت مخالف طاقت تھے  ۔ طالبان نے اپنے بیان میں افغانستان میں دولت اسلامیہ کی موجودگی کو غیر اہم قرار دیا ۔

TOPPOPULARRECENT