Tuesday , July 17 2018
Home / Top Stories / افغانستان کے صوبے ننگرہار میں 26 افراد ہلاک

افغانستان کے صوبے ننگرہار میں 26 افراد ہلاک

عیدالفطر کے موقع پر جنگ بندی کے دوران دشمنوں کے ملاپ کے جذباتی مناظر
کابل ۔ 17 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) افغانستان میں حکومت نے افغان طالبان کے ساتھ جنگ بندی میں یک طرفہ طور پر توسیع کا اعلان کیا ہے۔جنگ بندی میں توسیع کا اعلان افغان صدر اشرف غنی کی جانب سے کیا گیا۔تاہم ابھی تک افغان طالبان کی جانب سے اس حکومتی اعلان پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔ خیال رہے کہ افغان طالبان کی جانب سے جنگ بندی کی مدت اتوار کی رات ختم ہو رہی ہے۔اس حکومتی اعلان سے قبل افغان طالبان نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ جنگ بندی میں توسیع نہیں کی جائے گی۔دوسری جانب حکام کے مطابق مغربی شہر ننگرہار میں طالبان اور حکومتی اہلکاروں کے ایک اجتماع میں ایک خودکش حملے میں 26 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ننگرہار صوبے کے ترجمان آیت اللہ خوگیانی نے بی بی سی کو بتایا کہ طالبان ارکان اور مقامی رہائشی بھی اس حملے میں ہلاک ہوئے ہیں جو ایک پیدل خودکش بمبار نے کیا تھا۔‘اس سے پہلے عیدالفطر کے موقع پر تین روزہ جنگ بندی کے دوران افغان طالبان اور حکومتی افواج کو ایک دوسرے سے گلے ملتے دیکھا گیا ہے۔عیدالفطر کے موقع پر تین روزہ جنگ بندی کے دوران دارالحکومت کابل میں افغان طالبان جنگجوؤں نے وزیر داخلہ ویس برمک کے ساتھ ملاقات بھی کی ہے۔

صدر اشرف غنی نے ٹی وی پر خطاب کرتے ہوئے افغان صدر اشرف غنی نے کہا کہ حکومت طالبان کے ساتھ جامع مذاکرات کے لیے تیار ہے۔انھوں نے طالبان کے حوالے سے کہا کہ وہ تمام مسائل اور مطالبات جو سامنے رکھیں جائیں گے ان پر امن مذاکرات میں بات کرنے پر تیار ہیں۔صدر اشرف غنی نے کہا کہ مقدس ماہِ رمضان کے اختتام پر عید الفطر کے موقع پر طالبان اور حکومتی فورسز ایک دوسرے کے ساتھ بغل گیر ہوئے اور اس سے ثابت ہوتا ہے کہ ہم سب امن چاہتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ حکومت نے چند طالبان قیدیوں کو رہا کیا ہے اور جنگ بندی کے دوران طالبان جنگجو طبی اور انسانی امداد حاصل کر سکتے ہیں اور اس کے علاوہ قید میں طالبان اپنے خاندان سے ملاقات کر سکتے ہیں۔ وزیرِ خارجہ امریکہ مائیک پومپئیو نے کہا ہے کہ امن مذاکرات میں بین الاقوامی فوج اور فریقین کے کردار کے بارے میں بھی بات ہونی چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ فریقین کے ساتھ امن معاہدے اور سیاسی حل کے لیے مل کر کام کرنے پر تیار ہے اور اس کے نتیجے میں اس جنگ کا مستقل طور پر خاتمہ ہو جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT