Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کو قرض اجرائی کیلئے بہت جلد بجٹ جاری کرنے کا تیقن

اقلیتوں کو قرض اجرائی کیلئے بہت جلد بجٹ جاری کرنے کا تیقن

چیف منسٹر کا چیرمین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن اکبر حسین کی نمائندگی پر مثبت ردعمل
حیدرآباد۔ 7 ڈسمبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے صدرنشین اقلیتی فینانس کارپوریشن سید اکبر حسین کو تیقن دیا کہ اقلیتوں کو قرض کی اجرائی کے سلسلہ میں درکار بجٹ بہت جلد جاری کیا جائے گا۔ کریم نگر میں سید اکبر حسین نے چیف منسٹر سے ملاقات کی اور کالیشورم پراجیکٹ کے معائنے کو روانگی سے قبل انہیں امام ضامن باندھا۔ اکبر حسین نے چیف منسٹر سے نمائندگی کی کہ کارپوریشن کو بجٹ جاری کیا جائے تاکہ اقلیتوں کو خودروزگار اسکیم کے تحت قرض جاری کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین برسوں میں بجٹ کی عدم اجرائی کے نتیجہ میں کارپوریشن درخواستوں کی یکسوئی سے قاصر رہا ہے۔ ایک لاکھ 53 ہزار درخواستیں داخل کی گئیں اور کارپوریشن نے ابھی تک 14 ہزار درخواستوں کی یکسوئی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت درکار بجٹ جاری کرتی ہے تو کارپوریشن چھوٹے کاروبار شروع کرنے کے لیے قرض جاری کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ بینک سے کسی تعلق کے بغیر راست قرض کی اجرائی کے سلسلہ میں اسکیم تیار کی جارہی ہے۔ انہوں نے چیف منسٹر سے خواہش کی کہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کو مستحکم کرنے اور زائد اسکیمات پر عمل آوری کے لیے بجٹ کے ذریعہ سرپرستی کی جائے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ وہ اقلیتوں کی معاشی ترقی کے لیے انہیں خودروزگار اسکیمات کے تحت قرض فراہم کرنے کے حق میں ہیں اور انہوں نے عہدیداروں کو راست قرض فراہمی اسکیم تیار کرنے کی ہدایت دی ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ کارپوریشن کو مزید اسکیمات تیار کرتے ہوئے اقلیتوں کی معاشی پسماندگی کے خاتمہ کے اقدامات کرنے چاہئیں۔ چیف منسٹر نے کارپوریشن کے لیے مستقل منیجنگ ڈائرکٹر کے تقرر اور اقلیتی بہبود میں کارکرد عہدیداروں کو شامل کرنے کا تیقن دیا۔ انہوں نے کہا کہ اندرون ایک ہفتہ وہ عہدیداروں کی تبدیلی اور تقررات عمل میں لائیں گے۔ سید اکبر حسین نے اقلیتی بہبود ڈپارٹمنٹ میں جلال الدین اکبر اور ایم اے وحید جیسے عہدیداروں کی خدمات حاصل کرنے کی تجویز پیش کی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اگر محکمہ سے یہ نام انہیں پیش کیئے جائیں تو وہ اس پر غور کریں گے۔ صدرنشین کارپوریشن نے مستقل منیجنگ ڈائرکٹر کی عدم موجودگی کے سبب کارپوریشن میں کام کاج متاثر ہونے کی شکایت کی اور کہا کہ موجودہ ایم ڈی زیادہ تر وقت اقامتی اسکول سوسائٹی پر صرف کررہے ہیں اور انہیں کارپوریشن کی اسکیمات سے کوئی خاص دلچسپی نہیں۔ صدرنشین نے اردو کمپیوٹر سنٹرس کو عصری بنانے کے سلسلہ میں طلب کیے گئے ٹنڈرس میں بے قاعدگیوں اور اقربا پروری کی شکایت کی اور اس سلسلہ میں ملوث افراد کے ناموں سے چیف منسٹر کو واقف کروایا۔ کے سی آر نے تیقن دیا کہ وہ ان تمام شکایات کا سنجیدگی سے جائزہ لیں گے اور اقلیتی بہبود کے عہدیداروں سے رپورٹ طلب کریں گے۔ کریم نگر کے عوامی نمائندوں اور اقلیتی قائدین نے بھی چیف منسٹر سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں اقلیتوں کو درپیش مسائل اور محکمہ ا قلیتی بہبود کی عدم کارکردگی سے واقف کرایا۔

TOPPOPULARRECENT