Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کو کانگریس سے مناسب نمائندگی کا فیصلہ

اقلیتوں کو کانگریس سے مناسب نمائندگی کا فیصلہ

نئی دہلی میں اسکریننگ کمیٹی کا اجلاس ، اسمبلی کا لوک سبھا امیدواروں کے ناموں کا جائزہ

نئی دہلی میں اسکریننگ کمیٹی کا اجلاس ، اسمبلی کا لوک سبھا امیدواروں کے ناموں کا جائزہ

حیدرآباد ۔24 ۔ مارچ (سیاست نیوز) کانگریس ہائی کمان توقع ہے کہ آئندہ عام انتخابات میں اقلیتوں کو مناسب نمائندگی دینے کا فیصلہ کرچکا ہے ۔ نئی دہلی میں منعقدہ پارٹی کی اسکریننگ کمیٹی کے اجلاس میں اسمبلی و لوک سبھا حلقوں کیلئے امیدواروں کے ناموں کا جائزہ لیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ پارٹی نے مسلم اقلیت کو ایک لوک سبھا اور 10 اسمبلی حلقوں سے ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ تاہم اس سلسلہ میں قطعی فیصلہ صدر کانگریس سونیا گاندھی اور نائب صدر راہول گاندھی امیدواروں کے ناموں کی منظوری کے وقت کریں گے ۔ پارٹی کی انتخابی مہم کمیٹی کے معاون صدرنشین محمد علی شبیر نے اقلیتوں کو ٹکٹوں کی تقسیم میں مناسب نمائندگی کے سلسلہ میں اسکریننگ کمیٹی کے صدرنشین وائیلار روی اور آندھراپردیش امور کے انچارج ڈگ وجئے سنگھ سے نمائندگی کی۔ انہوں نے غلام نبی آزاد کے ذ ریعہ بھی اسکریننگ کمیٹی سے اس بات کی سفارش کی ہے کہ تلنگانہ میں اقلیتوں کی قابل لحاظ آبادی کو پیش نظر رکھتے ہوئے ٹکٹوں کی تقسیم میں انہیں مناسب نمائندگی دی جائے۔ جن حلقوں میں اقلیتی رائے دہندوں کی تعداد 35 فیصد سے زائد ہو وہاں سے مسلم امیدوار کو ٹکٹ دینے پر غور کیا جائے گا۔ محمد علی شبیر نے بتایا کہ انہوں نے ہر ضلع سے کم از کم ایک اقلیتی امیدوار کو ٹکٹ دینے کی نمائندگی کی جس سے اسکریننگ کمیٹی کے ارکان نے اتفاق کرلیا۔

صدر تلنگانہ پردیش کانگریس پونالہ لکشمیا کے علاوہ سابق ڈپٹی چیف منسٹر دامودر راج نرسمہا نے بھی اس تجویز کی تائید کی ۔ محمد علی شبیر نے 10 اضلاع میں مضبوط اقلیتی امیدواروں اور ان کی نشستوں پر مشتمل ایک فہرست بھی اسکریننگ کمیٹی اور صدر کانگریس سونیا گاندھی کے حوالے کی۔ بتایا جاتا ہے کہ اسمبلی حلقہ جات میں کاما ریڈی ، محبوب نگر ، کاغذ نگر، راما گنڈم (کریم نگر) ، ہنمکنڈہ (ورنگل)، سنگا ریڈی (میدک) اور اس کے علاوہ حیدرآباد کے بعض حلقوں سے اقلیتی امیدواروں کے نام زیر غور ہیں۔ سابق ریاستی وزیر محمد فرید الدین کو حلقہ اسمبلی سنگا ریڈی کی پیشکش کی گئی۔ تاہم وہ حلقہ لوک سبھا ظہیر آباد سے مقابلہ کے خو اہاں ہیں۔ محبوب نگر اسمبلی حلقہ کیلئے سید ابراہیم اور عبید اللہ کوتوال کے نام زیر غور ہیں جبکہ کاما ریڈی اسمبلی حلقہ سے محمد علی شبیر کے فرزند محمد الیاس کا نام تقریباً طئے مانا جارہا ہے۔ عادل آباد کے کاغذ نگر سے سلطان احمد یا ان کے فرزند جبکہ راما گنڈم سے محمد بابر کو ٹکٹ دیا جاسکتا ہے۔ کھمم اور ہنمکنڈہ اسمبلی حلقوں کیلئے دو سے زائد نام زیر غور بتائے جاتے ہیں۔ توقع ہے کہ آئندہ دو دن میں فہرست کو قطعیت دیدی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT