Monday , February 19 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کیلئے اوور سیز اسکالر شپ اسکیم

اقلیتوں کیلئے اوور سیز اسکالر شپ اسکیم

کسی بھی ملک کی یونیورسٹی میں داخلے پر امیدوار استفادہ کے اہل
اندرون 50 یوم 66 اردومترجمین کے تقرر کی ہدایت : چیف منسٹر کا جائزہ اجلاس

حیدرآباد۔ 20 نومبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو نے اوورسیز اسکالرشپ اسکیم کے تحت اقلیتی طلبہ کو محدود ممالک کے بجائے کسی بھی ملک کی یونیورسٹی میں داخلے کی سہولت فراہم کرنے کا اعلان کیا۔ محکمہ اقلیتی بہبود کو ہدایت دی گئی کہ اوورسیز اسکالرشپ اسکیم سے استفادہ کے لیے آمدنی کی حد کو 5 لاکھ اور شادی مبارک اسکیم کے لیے سرٹیفکیٹ کی رعایتوں سے متعلق احکامات فی الفور جاری کیے جائیں۔ چیف منسٹر نے آج اعلی سطحی اجلاس میں اقلیتی بہبود کے سلسلہ میں اسمبلی میں کیے گئے اعلانات اور تیقنات پر عمل آوری کی پیشرفت کا جائزہ لیا۔ انہوں نے اردو اکیڈیمی کے ذریعہ 50 دن میں 66 مترجمین کے تقررات مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ اس کے علاوہ آر ٹی سی، سنگارینی کالریز اور دیگر تقررات سے متعلق امتحانات اردو زبان میں منعقد کرنے کی ہدایت دی۔ چیف منسٹر نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے لیے تمام غیر متنازعہ جائیدادوں اور ان کے تحت موجود اراضیات کو تحویل میں لینے کی ہدایت دی تاکہ غیر مجاز قبضوں سے بچایا جاسکے۔ واضح رہے کہ چیف منسٹر نے 9 نومبر کو اسمبلی میں اقلیتی بہبود پر مباحث کا جواب دیتے ہوئے کئی اعلانات کیے تھے۔ جائزہ اجلاس میں ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی حکومت کے خصوصی مشیر راجیو شرما، نوین متل، سمتا سبروال، حکومت کے مشیر برائے اقلیتی امور اے کے خان، سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل، صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم، رکن اسمبلی عامر شکیل، منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ، سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور، چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ منان فاروقی اور دوسرے شریک تھے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر نے اسمبلی کے اعلانات پر عمل آوری کی ہدایت دی اور کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ تمام اعلانات کے سلسلہ میں احکامات جلد جاری کیے جائیں۔ انہوں نے مسلمانوں کو ایس سی، ایس ٹی اور بی سی طبقات کے مماثل فلاحی اسکیمات میں حصہ داری سے متعلق احکامات جاری کرنے کی ہدایت دی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اس فیصلے سے اقلیتیوں کی تعلیمی اور معاشی ترقی میں مدد ملے گی۔ انہوں نے ایس سی، ایس ٹی طبقات کے سکریٹریز کے ساتھ اجلاس منعقد کرنے کا مشورہ دیا۔ اردو اکیڈیمی کے ذریعہ 66 مترجمین کے تقررات کا حوالہ دیتے ہوئے چیف منسٹر نے اندرون 50 یوم تقررات کا عمل مکمل کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے کہا کہ یہ مترجمین محکمہ اقلیتی بہبود کے ملازمین شمار کیے جائیں گے اور اردو اکیڈیمی نوڈل ایجنسی کی طرف تقررات کا عمل مکمل کرے گی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ روزگار سے مربوط تمام امتحانات اور مسابقتی امتحانات دیگر زبانوں کے ساتھ اردو میں بھی منعقد کیئے جائیں۔ مہاراشٹرا میں اردو مدارس کی ترقی کے اقدامات کا جائزہ لینے بہت جلد ڈپٹی چیف منسٹرکڈیم سری ہری کی قیادت میں ٹیم مہاراشٹرا روانہ ہوگی۔ اس ٹیم میں اے کے خان، عمر جلیل اور دوسرے شامل ہوں گے۔ یہ ٹیم مہاراشٹرا حکومت کے اقدامات کے بارے میں رپورٹ پیش کرے گی جس کی بنیاد پر تلنگانہ میں اردو مدارس کی ترقی کے قدم اٹھائے جائیں گے۔ چیف منسٹر نے حج ہائوز سے متصل زیر تعمیر 7 منزلہ کامپلکس میں اقلیتی بہبود کے دفاتر کی منتقلی کا عمل تیز کرنے کی ہدایت دی اور ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی سے کہا کہ وہ ارکان اسمبلی کے ساتھ فوری عمارت کا دورہ کریں۔ محمود علی نے کہا کہ وہ نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو کے دورہ حیدرآباد کے سلسلہ میں مصروف ہیں۔ ان کی واپسی کے بعد وہ عمارت کا معائنہ کریں گے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود کو اوورسیز اسکالرشپ میں آمدنی کی حد 5 لاکھ مقرر کرنے اور شادی مبارک اسکیم کے لیے آدھار کارڈ کی جگہ کسی اور سرکاری سرٹیفکیٹ کو قبول کرنے کی اجازت سے متعلق احکامات فوری جاری کرنے کی ہدایت دی گئی۔ شادی مبارک اسکیم کے لیے اب آدھار کارڈ، ووٹر آئی ڈی کارڈ، ایس ایس سی میمو، ڈرائیونگ لائیسنس قابل قبول رہیں گے۔ اوورسیز اسکیم میں خلیجی ممالک کو شامل کرنے کی نمائندگی کی گئی تھی جس پر چیف منسٹر نے کہا کہ کسی بھی ملک کی مسلمہ یونیورسٹی میں داخلے پر اوورسیز اسکالرشپ دی جائے گی۔ شرط یہ ہوگی کہ یونیورسٹی مسلمہ ہو۔ انہوں نے جامعہ نظامیہ کے طلبہ کو بیرونی یونیورسٹیوں میں تعلیم کی اجازت دینے سے اتفاق کیا اور کہا کہ نظامیہ کی ڈگری بیرون ملک یونیورسٹیز میں قبول کی جائے گی۔ انہوں نے اسکالرشپ اسکیم کے بجٹ کو گرین چینل میں شامل کرنے کا مشورہ دیا تاکہ طلبہ کو دشواری نہ ہو۔ اجمیر میں رباط کی تعمیر کے سلسلہ میں عہدیداروں کی ٹیم بہت جلد راجستھان کا دورہ کرے گی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اراضی کے تعین کے بعد وہ خود سنگ بنیاد کے لیے اجمیر چلیں گے۔ انہوں نے آئمہ و موذنین کے ماہانہ اعزازیہ کے نشانہ کی تکمیل کی ہدایت دی اور کہا کہ فی الوقت 8 ہزار آئمہ و موذنین کو اعزازیہ جاری کیا جارہا ہے۔ مزید 2000 کو استفادہ کنندگان میں شامل کیا جائے۔ انہوں نے وقف بورڈ کے تحت درج رجسٹر تمام مساجد کے آئمہ و موذنین کو اعزازیہ دینے کی ہدایت دی۔ چیف منسٹر نے سرکاری اسکیمات کی مناسب تشہیر نہ ہونے پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور عہدیداروں سے کہا کہ وہ اقلیتوں میں سرکاری اسکیمات کی موثر انداز میں تشہیر کریں۔ اس کے لیے فوری طور پر ایک کروڑ روپئے کی منظوری سے اتفاق کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT