Thursday , December 13 2018

اقلیتوں کیلئے خود روزگار سبسیڈی اسکیم کا عنقریب آغاز

رہنمایانہ خطوط کی اجرائی ، استفادہ کنندگان کی حد عمر میں بھی اضافہ

رہنمایانہ خطوط کی اجرائی ، استفادہ کنندگان کی حد عمر میں بھی اضافہ
حیدرآباد۔2 ۔ فروری (سیاست نیوز) غریب اقلیتی خاندانوں کو خود روزگار اسکیم کے تحت اقلیتی فینانس کارپوریشن سے سبسیڈی کی اجرائی سے متعلق اسکیم پر جاریہ سال عمل آوری کا جلد آغاز ہوگا۔ حکومت نے اس اسکیم کے سلسلہ میں محکمہ بہبودی پسماندہ طبقات کیلئے رہنمایانہ خطوط جاری کردیئے ہیں۔ اسی بنیاد پر اقلیتوں کیلئے بھی بہت جلد اسکیم کے آغاز کی اجازت ملنے کا امکان ہے ۔ حکومت نے پسماندہ طبقات کیلئے اسکیم سے استفادہ کی عمر کی موجودہ حد 21 تا 40 سال کو بڑھاکر 21 تا 55 سال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اگر یہی رعایت اقلیتوں کو بھی دی جائے تو بڑی تعداد میں غریب اقلیتی خاندان اس اسکیم سے استفادہ کرپائیں گے۔ حکومت کی جانب سے رہنمایانہ خطوط کی عدم اجرائی کے سبب اقلیتی فینانس کارپوریشن نے ابھی تک سبسیڈی اسکیم کیلئے درخواستیں طلب نہیں کیں۔ مینجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن پروفیسر ایس اے شکور نے حکومت کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے بی سی طبقات کے مماثل رعایتوں کے ساتھ اقلیتوں کیلئے بھی اسکیم کا اعلان کرنے کی خواہش کی ہے۔ انہوں نے حکومت سے درخواست کی کہ عمر کی حد میں اضافہ کرتے ہوئے سبسیڈی کی اسکیم پر عمل آوری کی اجازت دی جائے۔ توقع ہے کہ حکومت بہت جلد اس سلسلہ میں فیصلہ کرے گی۔ اس اسکیم کے تحت اقلیتی فینانس کارپوریشن چھوٹے کاروبار کے آغاز کیلئے ایک لاکھ روپئے تک قرض فراہم کرتا ہے جبکہ قومیائے ہوئے بینک مساوی رقم یا اس سے زائد بطور قرض منظور کرتے ہیں۔ قرض کی رقم ایک لاکھ سے زائد ہونے کی صورت میں فینانس کارپوریشن کی سبسیڈی کی حد ایک لاکھ ہی برقرار رہے گی۔ گزشتہ سال کارپوریشن کی جانب سے منظورہ سبسیڈیز کو جاری کرنے کی حکومت کی جانب سے اجازت ملنے کے بعد تلنگانہ میں 90 فیصد امیدواروں میں سبسیڈی کی رقم جاری کردی گئی جو متعلقہ بینکوں تک پہنچ چکی ہے۔ بینک کی جانب سے قرض کے شرائط اور معاہدہ کی تکمیل کے بعد سبسیڈی اور قرض کی رقم پر مشتمل اکاونٹ کارکرد ہوجائے گا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT