Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کے مسائل کی یکسوئی سے ہی سنہرے تلنگانہ کا خواب پورا ہوگا

اقلیتوں کے مسائل کی یکسوئی سے ہی سنہرے تلنگانہ کا خواب پورا ہوگا

تلنگانہ فاونڈرس فورم ، تلنگانہ ایلڈرس فورم کے زیر اہتمام اقلیتوں اور شہریوں کے مسائل پر گول میز کانفرنس

تلنگانہ فاونڈرس فورم ، تلنگانہ ایلڈرس فورم کے زیر اہتمام اقلیتوں اور شہریوں کے مسائل پر گول میز کانفرنس
حیدرآباد ۔ 14 ۔ اکٹوبر : ( راست ) : تلنگانہ ایلڈرس فورم و تلنگانہ فاونڈرس فورم 69 کے زیر اہتمام گول میز کانفرنس بعنوان ’ نئی ریاست تلنگانہ میں اقلیتوں اور شہریوں کے مسائل ‘ بمقام مدینہ ایجوکیشن سنٹر نامپلی منعقد ہوگی ۔ جسٹس وامن راؤ سابق جج اے پی ہائی کورٹ و نائب صدر ایلڈرس تھینک ٹینک نے صدارت کی اور اپنے خطاب میں کہا کہ اقلیتوں کے مسائل کی یکسوئی حکومت کی دستوری ذمہ داری ہوتی ہے احسان نہیں ۔ موجودہ حالات میں مسلم قائدین صرف مسلم کمیونٹی کے بجائے پورے سماج کی قیادت کریں تاکہ خوشگوار ماحول پیدا ہوسکے ۔ مولانا عبدالرحیم قریشی صدر تعمیر ملت نے کہا کہ حالیہ عام انتخابات کے بعد سیاسی حالات یکسر تبدیل ہوچکے ہیں ۔ نصاب تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کی امکانی کوشش سے ہم کو چوکس رہنا چاہئے ۔ جناب خواجہ معین الدین جماعت اسلامی و یم پی جے نے کہا کہ 7 فروری 2010 سے قبل مسلمانوں کو تحریک سے دور سمجھا جاتاتھا لیکن 7 فروری کو نظام کالج کے جلسہ عام کے بعد اس غلط فہمی کا ازالہ ہوا ۔ آپ نے سیاسی تحفظات دینے کا مطالبہ کیا ۔ جناب کے ایم عارف الدین کنوینر تلنگانہ فاونڈرس فورم نے کہا کہ تلنگانہ تحریک مختلف مراحل طئے کرتے ہوئے جناب کے سی آر کے زیر قیادت نتیجہ خیز ثابت ہوئی موصوف نے پرامن تحریک کے ذریعہ تلنگانہ حاصل کیا ۔ جناب ٹی نرسمہا ایڈوکیٹ سی پی آئی لیڈر نے کہا کہ سی پی آئی نے ہمیشہ تحریک کا ساتھ دیا ۔ اور اقلیتوں کے مسائل کی پذیرائی میں ہمیشہ تعاون کرتی آئی ہے ۔ الیکٹرانک میڈیا ، مسلم قیادت کے ساتھ امتیازی سلوک کرتی ہے ۔ جسٹس ای اسماعیل نے کہا کہ 12 فیصد تحفظات کے لیے عملی اقدامات کئے جائیں ۔ پروفیسر فاطمہ شہناز نے کہا کہ تمام اضلاع میں طالبات کے لیے ڈگری اور پالی ٹیکنیک کالجس قائم کئے جائیں ۔ ڈاکٹر سیادت علی رکن سادات ایجوکیشن اینڈ ویلفیر سوسائٹی نے کہا کہ مولانا آزاد فاونڈیشن ( دہلی ) کی اسکیمات سے اقلیتیں استفادہ کریں ۔ نیہا ریڈی ایڈوکیٹ نے کہا کہ لڑکیوں کی شادی کی عمر 18 کے بجائے 20 سال کی جائے ۔ محمد فاروق سکریٹری مسلم ایجوکیشن سوسائٹی نے کہا کہ سابق حکومت نے تلگو کو لازمی مضمون اور 35 نمبرات کا حصول لازمی قرار دیا ہے جو مناسب نہیں ہے ۔ نواب علی الدین قادری ، جناب محمد تراب ، جناب ضیا الدین نیر ، جناب محمد عارف الدین ، جناب رحیم اللہ خاں نیازی نے بھی مخاطب کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT