Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی بہبود کی اسکیمات کو حقیقی مستحقین تک پہونچانے کی مساعی کرنے پر زور

اقلیتی بہبود کی اسکیمات کو حقیقی مستحقین تک پہونچانے کی مساعی کرنے پر زور

حیدرآباد ۔8 ۔ اپریل (سیاست نیوز) اقلیتی بہبود کی اسکیمات پر موثر عمل آوری اور اسکیمات کے فوائد حقیقی مستحقین تک پہنچانے کیلئے تمام اداروں کے عہدیداروں کو مساعی کرنی چاہئے ۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود محمد جلال الدین اکبر نے آج تمام اقلیتی اداروں کے عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کیا جس میں گزشتہ سال کی اسکیمات کا عمل آوری کا جائزہ

حیدرآباد ۔8 ۔ اپریل (سیاست نیوز) اقلیتی بہبود کی اسکیمات پر موثر عمل آوری اور اسکیمات کے فوائد حقیقی مستحقین تک پہنچانے کیلئے تمام اداروں کے عہدیداروں کو مساعی کرنی چاہئے ۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود محمد جلال الدین اکبر نے آج تمام اقلیتی اداروں کے عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کیا جس میں گزشتہ سال کی اسکیمات کا عمل آوری کا جائزہ اور جاریہ کامیاب عمل آوری کیلئے حکمت عملی پر غور کیا گیا۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ تمام اسکیمات کے نشانوں کی تکمیل اور بجٹ کے مکمل خرچ کو یقینی بنائے تاکہ گزشتہ سال کی طرح بجٹ کا زائد حصہ سرکاری خزانہ میں واپس ہونے سے بچ جائے۔ انہوں نے اسکیمات کے بارے میں عوام میں شعور بیداری اور رہنمائی کیلئے کام کرنے کا عہدیداروں کو مشورہ دیا۔ اقلیتی فینانس کارپوریشن اردو اکیڈیمی ، حج کمیٹی ، سی ای ڈی ایم اور کرسچن فینانس کارپوریشن کے عہدیداروں نے گزشتہ مالیاتی سال کی رپورٹ پیش کی۔ عہدیداروں نے بتایا کہ ریاست کی تقسیم اور پھر محکمہ اقلیتی بہبود اور اداروں کی تقسیم میں تاخیر کے سبب گزشتہ سال اسکیمات پر عمل آوری میں رکاوٹ ہوئی ہے۔ عہدیداروں نے یقین دلایا کہ جاریہ سال حکومت کی تمام اسکیمات پر موثر عمل آوری کو یقینی بنایا جائے گا اور ہر ادارہ میں عہدیدار و ملازمین سنجیدگی کا مظاہرہ کریں گے۔ جناب جلال الدین اکبر نے کہا کہ گزشتہ سال بینکوں سے مربوط سبسیڈی کی اجرائی اور ٹریننگ ایمپلائیمنٹ جیسی اسکیمات پر عمل آوری ممکن نہ ہوسکی۔ تاہم جاریہ سال ان اسکیمات پر موثر عمل آوری کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

انہوں نے بتایا کہ ٹریننگ ایمپلائیمنٹ کے تحت پیرا میڈیکل کورسس کو شامل کرنے کی تجویز ہے۔ اقلیتوں کیلئے ٹریننگ پروگرامس سرکاری ادارے کے ذریعہ انجام دیئے جائیں گے اور ضرورت پڑنے پر بعض نامور خانگی اداروں کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ اقلیتی بہبود کے تحت گروپ I اور گروپ II امتحانات کی تیاری کیلئے خصوصی کوچنگ کی تجویز ہے اور ان امتحانات میں ا قلیتی امیدواروں کی کامیابی کو یقینی بنانے کیلئے مشہور و معروف خانگی اداروں میں اقلیتی طلبہ کو اسپانسر کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ خانگی اداروں میں امیدواروں کو اسپانسر کرتے ہوئے گروپ I اور II میں اقلیتوں کی نمائندگی میں اضافہ کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سیول سرویس امتحانات کیلئے اقلیتی طلبہ کی تیاری اور کوچنگ کی اسکیم کا از سر نو جائزہ لیا جائے گا اور ٹریننگ کے موجودہ طریقہ کار کے بجائے زائد بجٹ خرچ کرتے ہوئے نامور خانگی اداروں میں کوچنگ فراہم کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ سیول سروسیز میں اقلیتوں کی نمائندگی میں اضافہ کرنا ان کی اولین ترجیح ہے۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود کے مطابق گزشتہ سال بیشتر اسکیمات پر مکمل عمل آوری کی گئی اور اداروں کی کارکردگی بھی اطمینان بخش رہی۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ میں درکار اسٹاف کی بھرتی کے ذریعہ اسکیمات پر عمل آوری کے کام میں تیزی پیدا کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ اقلیتی بہبود کو حکومت کا مکمل تعاون حاصل ہے اور حکومت اقلیتوں کی تعلیمی اور معاشی ترقی میں سنجیدہ ہے۔ اجلاس میں اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور، مینجنگ ڈائرکٹر کرسچن فینانس کارپوریشن نکولس اور دیگر عہدیداروں نے شرکت کی۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود نے تمام اداروں کا وقفہ وقفہ سے جائزہ اجلاس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اسکیمات کے سلسلہ میں نئی تجاویز پر غور کیا جاسکے۔ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے ذریعہ چھوٹے کاروبار کے آغاز کیلئے غریب افراد کو راست طور پر قرض جاری کرنے کی تجویز زیر غور ہے جس کے تحت 50,000 روپئے تک کا قرض اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے جاری کیا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT