Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی بہبود کے بجٹ کو خرچ کرنے ایکشن پلان کو قطعیت

اقلیتی بہبود کے بجٹ کو خرچ کرنے ایکشن پلان کو قطعیت

اسکیمات پر عمل اور شفافیت کو یقینی بنانے کی مساعی، جناب احمد ندیم کا بیان

اسکیمات پر عمل اور شفافیت کو یقینی بنانے کی مساعی، جناب احمد ندیم کا بیان
حیدرآباد۔/6ڈسمبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت کی جانب سے اقلیتی بہبود کیلئے مختص کردہ 1030کروڑ کے مکمل خرچ کو یقینی بنانے کیلئے سکریٹری اقلیتی بہبود جناب احمد ندیم نے اقلیتی اداروں کے سربراہوں کے ساتھ ایکشن پلان کو قطعیت دی ہے جس کے تحت تمام اسکیمات پر موثر عمل آوری اور شفافیت کے ساتھ بجٹ کے خرچ کو یقینی بنانے پر توجہ دی جائے گی۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے اقلیتی اداروں کے سربراہوں سے اس سلسلہ میں تجاویز طلب کی ہیں اور ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جناب جلال الدین اکبر نے ایکشن پلان کا عبوری خاکہ سکریٹری کو پیش کیا۔ جناب احمد ندیم نے ’سیاست‘ کو بتایا کہ حکومت چاہتی ہے کہ اقلیتی بہبود کی تمام اسکیمات پر آئندہ چار ماہ میں مکمل عمل آوری ہو تاکہ اسکیمات کے فوائد حقیقی مستحق اقلیتی خاندانوں تک پہنچ سکیں۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ آئندہ چار ماہ میں مکمل بجٹ خرچ کرنا یقینا محکمہ کیلئے کسی چیلنج سے کم نہیں تاہم انہیں یقین ہے کہ تمام اقلیتی اداروں کے ذمہ دار بجٹ کے خرچ اور اسکیمات پر عمل آوری میں سنجیدگی سے کام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اسکالر شپ، فیس بازادائیگی کے علاوہ غریب لڑکیوں کی شادی کے موقع پر امداد کی جو اسکیم شروع کی ہے اس پر مکمل توجہ دی جارہی ہے۔ جناب احمد ندیم نے کہا کہ گزشتہ دو برسوں کے175کروڑ کے بقایا جات میں سے 75کروڑ جاری کردیئے گئے جو اقلیتی طلبہ کی اسکالر شپ اور فیس بازادائیگی اسکیمات کیلئے ہیں مزید 100کروڑ روپئے بہت جلد جاری کردیئے جائیں گے جس سے گزشتہ دو برسوں کے زیر التواء درخواستوں کی مکمل یکسوئی ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے تعلیمی امداد سے متعلق FASTاسکیم کے قواعد کو ابھی طئے نہیں کیا ہے جس کے باعث درخواستوںکی وصولی میں تاخیر ہورہی ہے۔ حکومت کی جانب سے نئی اسکیم کے قواعد طئے کئے جانے کے بعد درخواستیں وصول کی جائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ اقلیتی اسکیمات پر شفافیت کے ساتھ عمل آوری ان کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ میں اسٹاف کی کمی کے سبب یقینا بعض دشواریوں کا سامنا ہے لیکن وہ اس بات کی کوشش کررہے ہیں کہ اسکیمات پر عمل آوری میں کوئی رکاوٹ نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ ملازمین اور اقلیتی اداروں کی تقسیم میں تاخیر کے سبب بعض انتظامی دشواریوں کا سامنا ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اقلیتی اداروں کی تقسیم کا عمل جلد مکمل کرلیا جائے گا۔ محکمہ نے حکومت کو اس سلسلہ میں تجاویز پیش کردی ہیں۔ جناب احمدندیم نے بتایا کہ وہ شادی مبارک اسکیم پر عمل آوری کے سلسلہ میں ڈائرکٹر اقلیتی بہبود سے ربط میں ہیں ۔ اس اسکیم کیلئے ابھی تک 300سے زائد درخواستیں داخل کی گئیں جن کی جانچ کا کام جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ دو ماہ میں شادیوں کا سیزن نہ ہونے کے سبب درخواستیں کم وصول ہوئی ہیں۔ 2اکٹوبر کے بعد ہونے والی شادی کیلئے اس اسکیم کے تحت درخواست دی جاسکتی ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ شادی مبارک اسکیم کے سلسلہ میں حکومت نے جو نشانہ مقرر کیا ہے اس کی تکمیل کی جائے گی۔ جناب احمد ندیم نے بتایا کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے وقف بورڈ کو مستحکم کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ میں اسٹاف کی کمی اہم مسئلہ ہے اس سلسلہ میں حکومت سے سفارش کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ہر ضلع میں اقلیتی طلبہ کیلئے اقامتی اسکول اور ہاسٹل کے قیام کی اسکیم پر عمل آوری کی جائے گی اور توقع ہے کہ آئندہ دو برسوں میں ہر ضلع میں اقلیتی طلباء کیلئے اقامتی اسکول اور ہاسٹل قائم کردیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ اقلیتوں کی تعلیمی ترقی سے متعلق اقدامات ان کی اولین ترجیح ہیں۔

TOPPOPULARRECENT