Tuesday , April 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی فینانس کارپوریشن سے زیر التوا درخواستوں کو سبسیڈی کی اجرائی

اقلیتی فینانس کارپوریشن سے زیر التوا درخواستوں کو سبسیڈی کی اجرائی

بورڈ کے اجلاس میں فیصلہ، کمپیوٹر سنٹرس کو عصری بنانے صدرنشین اکبر حسین کی ہدایت
حیدرآباد۔23 ۔ جنوری (سیاست نیوز) اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے اقلیتی امیدواروں کو بینک سے مربوط سبسیڈی کی اجرائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس سلسلہ میں حکومت کی جانب سے جاری کردہ 59 کروڑ روپئے کی رقم زیر التواء درخواست گزاروں کو جاری کی جائے گی ۔ کارپوریشن کے بورڈ آف ڈائرکٹرس کا اجلاس آج صدرنشین سید اکبر حسین کی صدارت میں منعقد ہوا۔ مینجنگ ڈائرکٹر بی شفیع اللہ آئی ایف ایس اور دیگر ارکان نے شرکت کی۔ اجلاس میں بجٹ کے خرچ اور اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ لیا گیا ۔ حکومت نے 59 کروڑ روپئے حال ہی میں جاری کئے ہیں ۔ لہذا اس رقم کو زیر التواء درخواستوں کیلئے جاری کرنے بورڈ نے منظوری دی ہے۔ صدرنشین سید اکبر حسین نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کارپوریشن کو موصولہ ایک لاکھ 58 ہزار درخواستوں میں 18 ہزار سے زائد درخواستوں کی یکسوئی کردی گئی ۔ چیف منسٹر نے بینکوں سے کسی تعلق کے بغیر راست قرض کی اجرائی کی اسکیم تیار کرنے کی ہدایت دی ہے۔ اسکیم کی تیاری تک کارپوریشن نے موجودہ بجٹ کو زیر التواء درخواستوں کیلئے جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایسی درخواستیں جن میں کم سبسیڈی دی جاسکتی ہے، انہیں ترجیح دی جائے گی تاکہ زیادہ سے زیادہ اقلیتی امیدواروں کو فائدہ پہنچ سکے۔ اکبر حسین نے کہا کہ آئندہ مالیاتی سال سے کارپوریشن راست قرض کی اسکیم کا آغاز کرے گا۔ چھوٹے کاروبار شروع کرنے کیلئے غریب مسلمانوں کو مائیکرو فینانس اسکیم کے تحت مدد دی جائے گی ۔ اس سلسلہ میں مختلف اضلاع میں کامیاب تجربہ کیا گیا۔ اسکیم کی تیاری کا کام جاری ہے اور توقع ہے کہ آئندہ سال سے عمل آوری ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ سلائی مشینوں کی تقسیم کے سلسلہ میں بعض شکایات کو دیکھتے ہوئے کارپوریشن نے فیصلہ کیا کہ ٹریننگ سرٹیفکٹ کے حامل اداروں کو ہی سلائی مشین منظور کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اس اسکیم کا مقصد غریب خواتین کو خود مکتفی بنانا ہے۔ کارپوریشن نے اسکل ڈیولپمنٹ کے تحت مختلف کورسس کے آغاز کا منصوبہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمپیوٹر سنٹرس کو عصری بنانے پہلے مرحلے میں محبوب نگر اور ورنگل کے مراکز کو کمپیوٹر جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ باقی 31 مراکز کیلئے جلد ہی کمپیوٹرس کی سربراہی عمل میں آئیگی۔ اکبر حسین نے بتایا کہ کمپیوٹر ٹریننگ کیلئے موجودہ اسٹاف کو ٹرینڈ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کمپیوٹر سنٹرس کے ملازمین کی تنخواہوں اور سنٹرس کے کرایہ کی اجرائی کے سلسلہ میں مینجنگ ڈائرکٹر کو ہدایت جاری کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمپیوٹر سنٹرس کے ذریعہ ریاست بھر میں اقلیتی نوجوانوں کو روزگار پر مبنی کورسس کی ٹریننگ فراہم کرتے ہوئے انہیں مختلف سرکاری اور نیم سرکاری اداروں میں تقررات کی رہنمائی کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کارپوریشن سے مزید نئی اسکیمات کے آغاز کی تجویز ہے۔ انہوں نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے اظہار تشکر کیا جنہوں نے کارپوریشن کو درکار فنڈ جاری کرنے سے اتفاق کیا ہے۔ بورڈ کے اجلاس میں بعض عہدیداروں اور ملازمین کو ترقی دینے کا معاملہ زیر بحث رہا لیکن اسے آئندہ اجلاس کے لئے ملتوی کردیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT