Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی فینانس کارپوریشن سے سبسیڈی اسکیم میں قواعد کی خلاف ورزی

اقلیتی فینانس کارپوریشن سے سبسیڈی اسکیم میں قواعد کی خلاف ورزی

ضلع کلکٹر سے سماجی تنظیم کی شکایت ، حقیقی درخواست گذار اسکیم سے محروم
حیدرآباد ۔ 17 ۔ مئی (سیاست نیوز) اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے بینک قرض پر سبسیڈی اسکیم کے استفادہ کنندگان کے انتخاب میں قواعد کی خلاف ورزی کا انکشاف ہوا ہے ، اس سلسلہ میں ایک سماجی تنظیم اسیم کی جانب سے ضلع کلکٹر حیدرآباد کو نمائندگی کی گئی۔ تنظیم کے جوائنٹ سکریٹری ایس کیو مسعود نے کلکٹر کو روانہ کردہ مکتوب میں بتایا کہ حکومت نے خود روزگار اسکیم کے تحت جی او ایم ایس 101 میں رہنمایانہ خطوط جاری کئے جس کے تحت بینک سے قرض پر کارپوریشن سے سبسیڈی کی اجرائی عمل میں آتی ہے۔ تنظیم نے کہا کہ مالیاتی سال 2016-17 ء کے استفادہ کنندگان کا انتخاب مکمل کرلینے کا دعویٰ کیا جارہا ہے اور کارپوریشن کی جانب سے ایک بھی درخواست قبول نہیں کی جارہی ہے ۔ جی او ایم ایس 101 کے تحت اسکیم پر عمل آوری کرنے والی ایجنسیاں منڈل اور ضلع سطح پر کیمپ منعقد کرتے ہوئے حقیقی استفادہ کنندگان کا انتخاب کریں لیکن حیدرآباد  ضلع میں عہدیداروں نے ایک بھی منڈل میں کیمپ منعقد نہیں کیا۔ برخلاف اس کے کہ استفادہ کنندگان کا انتخاب کرلیا گیا جس سے اقلیتی فینانس کارپوریشن اور ضلع نظم و نسق کی لاپرواہی ثابت ہوتی ہے ۔ تنظیم میں  ضلع کلکٹر سے درخواست کی ہے کہ حیدرآباد ضلع کیلئے داخل کی گئی تمام درخواستوں کا منڈل سطح پر کیمپ منعقد کرتے ہوئے جائزہ لیا جائے تاکہ حقیقی معنوں میں مستحق افراد کو اسکیم سے استفادہ ہوسکے۔ اسی دوران مختلف درخواست گزاروں نے شکایت کی ہے کہ ہر  ضلع میں استفادہ کنندگان کے انتخاب کے سلسلہ میں کئی بے قاعدگیاں کی گئیں اور درمیانی افراد کے ذریعہ کارپوریشن کے عہدیداروں نے بھاری رقومات حاصل کی ہیں۔ اس طرح حقیقی درخواست گزاروں کو نظر انداز کردیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT