Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی فینانس کی سبسیڈی اسکیم پر پیر سے عمل آوری

اقلیتی فینانس کی سبسیڈی اسکیم پر پیر سے عمل آوری

دو کروڑ کی سبسیڈیاں منظور ، آن لائن سسٹم کو بحال کردیا جائے گا : پروفیسر ایس اے شکور

دو کروڑ کی سبسیڈیاں منظور ، آن لائن سسٹم کو بحال کردیا جائے گا : پروفیسر ایس اے شکور
حیدرآباد۔/6جون، ( سیاست نیوز) اقلیتی فینانس کارپوریشن کی بینکوں سے مربوط سبسیڈی کی فراہمی اسکیم پر 9جون سے عمل آوری کا آغاز ہوگا۔ ریاست کی تقسیم کے عمل کے باعث اس اسکیم پر عمل آوری کو روک دیا گیا تھا اور آن لائن طریقہ کار کو منقطع کردیا گیا تھا۔ توقع ہے کہ پیر سے یہ سسٹم بحال ہوجائے گا اور امیدوار اپنی درخواستوں کے موقف کے بارے میں ویب سائٹ پر معلومات حاصل کرپائیں گے۔ اقلیتی فینانس کارپوریشن نے جملہ 23اضلاع میں تاحال 46کروڑ 82لاکھ 13ہزار روپئے بطور سبسیڈی جاری کردی ہے جس کے استفادہ کنندگان کی تعداد 11,717 ہے۔ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ تقریباً 2کروڑ روپئے سبسیڈی کی منظوریاں کارپوریشن کے پاس موجود ہیں اور پیر کے بعد یہ رقم امیدواروں کے بینک اکاؤنٹ میں جمع کردی جائے گی۔ اس اسکیم کیلئے حکومت نے 100کروڑ روپئے مختص کئے تھے تاہم مالیاتی سال کے اختتام تک صرف 75کروڑ روپئے ہی جاری کئے گئے۔ ایک سال میں استفادہ کنندگان کا نشانہ 26,620 مقرر کیا گیا تھا۔ پہلے مرحلہ میں 4,175 امیدواروں میں 11کروڑ 12لاکھ 87ہزار روپئے بطور سبسیڈی جاری کئے گئے بعد میں حکومت نے سبسیڈی کے قواعد میں ترمیم کردی جس کے بعد پہلے مرحلے میں 35کروڑ69لاکھ 26ہزار روپئے کی سبسیڈی 7,542 امیدواروں میں جاری کی گئی۔ مجموعی طور پر ابھی تک دونوں ریاستوں کے 23اضلاع میں سبسیڈی کی اجرائی کا 47فیصد نشانہ مکمل کرلیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بینکوں سے جیسے جیسے منظوریاں حاصل ہوں گی کارپوریشن رقم امیدواروں کے اکاؤنٹ میں جاری کردے گا۔ سبسیڈی کی اجرائی کے سلسلہ میں پرکاشم، نظام آباد اور عادل آباد سرفہرست رہے۔ پرکاشم ضلع میں 95فیصد نشانہ کی تکمیل کرلی گئی جبکہ نظام آباد میں 91فیصد اور عادل آباد میں 81فیصد نشانہ مکمل کرلیا گیا۔ اس کے علاوہ کریم نگر، کھمم، کرنول، محبوب نگر، میدک، وجیانگرم اور ورنگل میں بھی سبسیڈی کی اجرائی میں بہتر مظاہرہ کیا گیا۔ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن نے مابقی اضلاع کے ایکزیکیٹو ڈائرکٹرس کو ہدایت دی ہے کہ وہ درخواستوں کی عاجلانہ یکسوئی کیلئے متحرک ہوجائیں اور متعلقہ ضلع کلکٹرس اور بینکرس سے ربط پیدا کرتے ہوئے درخواستوں کی یکسوئی کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ کارپوریشن سبسیڈی کی اجرائی کے سلسلہ میں دیئے گئے نشانہ سے زیادہ امیدواروں کو سبسیڈی جاری کرنے کے موقف میں ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT