Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی لڑکیوں کی ’شادی مبارک ‘اسکیم کی سرکاری سطح پر تشہیر کا فیصلہ

اقلیتی لڑکیوں کی ’شادی مبارک ‘اسکیم کی سرکاری سطح پر تشہیر کا فیصلہ

ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جناب محمد جلال الدین اکبر کی اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کو ہدایت

ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جناب محمد جلال الدین اکبر کی اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کو ہدایت
حیدرآباد۔/8نومبر، ( سیاست نیوز) غریب اقلیتی لڑکیوں کی شادی کے سلسلہ میں تلنگانہ حکومت کی جانب سے فی کس 51ہزار روپئے امداد سے متعلق اسکیم ’ شادی مبارک‘ کی مناسب تشہیر کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود محمد جلال الدین اکبر نے حیدرآباد اور اضلاع سے تعلق رکھنے والے اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کو ہدایت دی ہے کہ وہ اس اسکیم کے بارے میں اقلیتوں میں مناسب تشہیر کریں تاکہ زیادہ سے زیادہ مستحق خاندان استفادہ کرسکیں۔ مستحق افراد کو امداد کے حصول کے سلسلہ میں رہنمائی کیلئے محکمہ اقلیتی بہبود نے ہیلپ لائن اور ہیلپ ڈیسک کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔ ڈائرکٹوریٹ آف میناریٹیز کے دفتر واقع تلک روڈ میں ہیلپ ڈیسک قائم کیا جارہا ہے۔ اس کے علاوہ ایک ٹیلی فون نمبر دیا جائے گا جس پر غریب خاندانوں کو درخواستوں کے ادخال اور ضروری دستاویزات کے سلسلہ میں رہنمائی کی جائے گی۔ ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ محمد محمود علی پیر کے دن 4بجے شام ڈائرکٹر اقلیتی بہبود کے دفتر میں ہیلپ لائن اور ہیلپ ڈیسک کا افتتاح کریں گے۔ اس موقع پر ہیلپ لائن نمبر کا اعلان کیا جائے گا۔حکومت نے 2 اکٹوبر سے شادی مبارک اسکیم پر عمل آوری کا آغاز کیا لیکن قواعد میں تبدیلی کی کارروائی کے سبب درخواستوں کی وصولی میں تاخیر ہوئی۔ آن لائن درخواستوں کے ادخال کیلئے ویب سائٹ کا گزشتہ ہفتہ آغاز ہوا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس اسکیم سے استفادہ کیلئے تلنگانہ کے 10اضلاع میں ابھی تک صرف 30درخواستیں ہی وصول ہوئی ہیں اور عہدیداروں کی جانب سے ان کی تنقیح کے بعد ہی امداد کے استحقاق کا پتہ چلے گا۔ اسکیم کے سلسلہ میں درخواستوں کی وصولی کی سست رفتار کو دیکھتے ہوئے حکومت نے تمام 10اضلاع میں مناسب تشہیر کا فیصلہ کیا ہے۔ تلنگانہ حکومت نے 11نومبر کو یوم اقلیتی بہبود کے موقع پر شادی مبارک اسکیم کے چند استفادہ کنندگان میں چیکس تقسیم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مالیاتی سال 2014-15 میں حکومت نے اس اسکیم کیلئے 100کروڑ روپئے مختص کئے ہیں جبکہ اجتماعی شادیوں کے نام پر 5کروڑ روپئے مختص کئے گئے کیونکہ اجتماعی شادیوں کی اسکیم ختم ہوچکی ہے لہذا 5کروڑ روپئے اجتماعی شادیوں کے اکاؤنٹ میں شمار کئے جائیں گے۔ محکمہ اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ بجٹ کی اجرائی میں ایک ماہ کا وقت لگ سکتا ہے لہذا ڈسمبر سے اس اسکیم پر تیزی سے عمل آوری کا امکان ہے۔

TOPPOPULARRECENT