Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی کارپوریشن کی سبسیڈی اسکیم سے قرض دلانے کا جھانسہ

اقلیتی کارپوریشن کی سبسیڈی اسکیم سے قرض دلانے کا جھانسہ

پرانے شہر میں ٹولی کی سرگرمیاں ، پولیس میں شکایت کرنے کا اعلان ، پروفیسر ایس اے شکور

پرانے شہر میں ٹولی کی سرگرمیاں ، پولیس میں شکایت کرنے کا اعلان ، پروفیسر ایس اے شکور
حیدرآباد۔/24اکٹوبر، ( سیاست نیوز) اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے بینکوں سے مربوط سبسیڈی کی اجرائی سے متعلق اسکیم کے بارے میں بعض افراد کی جانب سے درخواست گذاروں سے رقومات کی وصولی کی شکایت ملی ہے۔ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن پروفیسر ایس اے شکور کو پرانے شہر سے تعلق رکھنے والے کئی درخواست گذاروں نے شکایت کی کہ بعض افراد پرانے شہر کے بینکوں میں ان کے اکاونٹس میں سبسیڈی کی رقم منتقل کرنے کا لالچ دے کر بھاری رقومات وصول کررہے ہیں۔ اس سلسلہ میں ایک ٹولی سرگرم ہے جو اقلیتی فینانس کارپوریشن میں داخل کردہ درخواستوں کی فہرست حاصل کرکے درخواست گذاروں سے ربط قائم کررہی ہے۔ شکایت میں کہا گیا ہے کہ بعض بینکس کے ملازمین سے ان کی ملی بھگت ہے اور سبسیڈی کی رقم اکاؤنٹ میں منتقل کرنے کا لالچ دے کر فرضی معاہدہ پر دستخط لئے جارہے ہیں۔ یہ ٹولی پرانے شہر میں واقع بینکوں میں زیادہ سرگرم دکھائی دی ہے۔ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن نے وضاحت کی کہ کوئی بھی شخص سبسیڈی کی رقم اکاؤنٹ میں منتقل کرنے کا دعویٰ نہیں کرسکتا۔ انہوں نے کہا کہ جن درخواستوں کیلئے سبسیڈی کی رقم منظور کی گئی وہ رقم ابھی تک جاری نہیں کی گئی کیونکہ حکومت نے اس رقم سے متعلق اکاؤنٹ کو منجمد کردیا ہے۔ جب تک حکومت کی جانب سے رقم جاری نہیں کی جاتی اس وقت تک سبسیڈی کی رقم بھی منتقل نہیں ہوگی۔ پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ سبسیڈی کی رقم اکاؤنٹ میں منتقل کئے جانے سے قبل درخواست گذاروں کو متعلقہ بینک سے تمام ضروری دستاویزی اُمور کی تکمیل کرنی ہوگی۔ جب تک بینک امیدوار کی جانب سے رقم کی واپسی کے بارے میں مطمئن نہیں ہوگا اس وقت تک وہ قرض کی اجرائی سے اتفاق نہیں کرے گا۔ ایسی صورت میں کارپوریشن کی سبسیڈی کی رقم بھی جاری نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ درخواست گذاروں کو اس طرح کے دھوکہ بازوں سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے اور ان کی جانب سے رقم کی ادائیگی کیلئے کارپوریشن ذمہ دار نہیں ہوگا۔ پروفیسر ایس اے شکور نے وضاحت کی کہ اس طرح کے افراد اور ان کی سرگرمیوں کا کا رپوریشن سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ان دھوکہ بازوں کے بارے میں تمام معلومات حاصل کرنے کے بعد ان کے خلاف پولیس میں شکایت درج کی گئی جائے گی تاکہ مستقل طور پر ان غیر مجاز اور دھوکہ دہی کی سرگرمیوں کا ازالہ ہوسکے۔

TOPPOPULARRECENT