Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی کمیشن ، دونوں ریاستوں کا غیر منقسم ادارہ برقرار رہے گا

اقلیتی کمیشن ، دونوں ریاستوں کا غیر منقسم ادارہ برقرار رہے گا

ایک سالہ مثالی کارکردگی کی عنقریب رپورٹ کی پیشکش ، جناب عابد رسول خاں کی پریس کانفرنس

ایک سالہ مثالی کارکردگی کی عنقریب رپورٹ کی پیشکش ، جناب عابد رسول خاں کی پریس کانفرنس

حیدرآباد ۔ 17 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : ریاستی اقلیتی کمیشن اپنی ایک سالہ مثالی کارکردگی پر مبنی رپورٹ بہت جلد ( آئندہ دو تین یوم میں ) گورنر ریاست تلنگانہ مسٹر ای ایس ایل نرسمہن اور چیف منسٹر ریاست تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو پیش کرے گا ۔ صدر نشین ریاستی اقلیتی کمیشن جناب عابد رسول خاں نے اپنے ایک سال کی تکمیل پر اپنے نئے دفتر ( واقع متصل لیک ویو گیسٹ ہاوز ) راج بھون روڈ میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مذکورہ اظہار خیال کیا اور بتایا کہ ریاستی اقلیتی کمیشن جو کہ دستور ہند کے شیڈول 10 کے تحت دونوں ریاستوں ( تلنگانہ اور آندھرا پردیش ) کے لیے ایک ہی کمیشن کی شکل میں برقرار رہے گا ۔ اس سلسلہ میں بعض افراد میں پائے جانے والے مختلف شکوک و شبہات کو دور کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی اقلیتی کمیشن غیر منقسم ادارہ کی حیثیت سے برقرار رہے گا ۔ اگر اس ریاستی اقلیتی کمیشن کو تقسیم کرنا ہو تو مرکزی حکومت کی جانب سے پارلیمنٹ میں ایک علحدہ بل پیش کرنا ہوگا ۔ انہوں نے ریاستی اقلیتی کمیشن کے لیے آئندہ روبہ عمل لائے جانے والے مختلف پروگراموں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی اقلیتی کمیشن کی جانب سے پہلی مرتبہ ضرورت مند اصحاب بشمول انجینئرنگ و میڈیسن کورسیس میں داخلہ کے خواہش مند افراد کے لیے مفت کونسلنگ و گائیڈنس پرگرام کا آغاز کیا جائے گا ۔ اس پروگرام کی موثر عمل آوری کو یقینی بنانے کے لیے بعض سینئیر ریٹائرڈ عہدیداروں و پروفیسرس کی خدمات حاصل کی جائیں گی ۔ علاوہ ازیں ریاستی اقلیتی کمیشن سے کسی نمائندگی کے لیے دور دراز مقامات سے شہر حیدرآباد آنے والے افراد کے لیے مفت رہائشی سہولتیں فراہم کرنے کا جناب عابد رسول خاں صدر نشین اقلیتی کمیشن نے اعلان کیا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاستی اقلیتی کمیشن کی جانب سے انجینئرنگ میڈیسن میں داخلوں کے خواہش مند طلباء وطالبات کے لیے مفت کونسلنگ اور نمائندگی کے لیے کمیشن آفس آنے والے غیر مقامی افراد کو مفت رہائشی سہولتوں کی فراہم اپنی نوعیت کا ایک منفرد اقدام ہے ۔ صدر نشین ریاستی اقلیتی کمیشن نے بتایا کہ گذشتہ ایک سال کے دوران کمیشن نے کئی ایک موثر اقدامات کے ذریعہ اقلیتی طبقات کی ممکنہ مدد کی ہے ۔ بالخصوص اقلیتوں کے ساتھ پیش آنے والی متعدد نا انصافیوں کی شکایات ، پولیس ظلم و زیادتیوں و ہراسانیوں کے واقعات ، اقلیتوں کے ساتھ امتیاز برتے جانے کے واقعات کی یکسوئی کرنے کے علاوہ اقلیتوں کو اسکالر شپس ، بینک قرضوں وغیرہ کی فراہمی میں کی جانے والی نا انصافیوں کی شکایات پر مداخلت کر کے اپنی موثر نمائندگی کے ذریعہ مذکورہ مسائل کی یکسوئی میں بھی کمیشن نے اپنا گرانقدر کارنامہ انجام دیا ہے ۔ انہوں نے گذشتہ دن سکریٹریٹ میں چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے ساتھ منعقدہ رمضان المبارک کے سلسلہ میں کئے جانے والے انتظامات کا جائزہ لینے کے لیے منعقدہ اجلاس کا تذکرہ کیا ۔ اور بتایا کہ انہوں نے مکہ مسجد اور شاہی مسجد باغ عامہ میں جنریٹر کی فراہمی میں کی جانے والی تاخیر سے متعلق چیف منسٹر کو واقف کروایا اور جیلوں میں مقید افراد کو کم سے کم ماہ رمضان المبارک میں سحر و افطار کے لیے بہتر انتظامات کرنے اور ان قیدیوں کو باقاعدہ طور پر با جماعت نماز ادا کرنے کی سہولت فراہم کرنے کے لیے اقدامات کرنے سے متعلق چیف منسٹر کو واقف کروایا ۔ اور آج خود کمیشن نے جیل عہدیداروں کو نوٹس بھی دیتے ہوئے وضاحت طلب کیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کشن باغ میں گذشتہ ماہ مسلمانوں پر فائرنگ کے پیش آئے واقعہ پر حقائق کا پتہ چلانے کے لیے خود کمیشن نے بھی تحقیقات کا آغاز کیا ہے ۔ اس موقعہ پر کمیشن کے ارکان سرجیت سنگھ اور گوتم جین بھی موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT