Tuesday , April 24 2018
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی کمیشن کا دورۂ نرمل، صورتحال کا جائزہ

اقلیتی کمیشن کا دورۂ نرمل، صورتحال کا جائزہ

بے قصور اقلیتی نوجوانوں کے مقدمات پر کلکٹر اور ایس پی سے نمائندگی
حیدرآباد۔ 4 اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ ریاستی اقلیتی کمیشن نے آج نرمل کا دورہ کرتے ہوئے حال ہی میں فرقہ وارانہ کشیدگی سے متاثرہ علاقوں کا معائنہ کیا۔ کمیشن کے صدرنشین محمد قمرالدین کی قیادت میں نائب صدرنشین شنکرلو اور رکن سریندر سنگھ نے دونوں طبقات کے نمائندوں سے ملاقات کی اور صورتحال سے آگہی حاصل کی۔ کلکٹر نرمل پرشانتی کمار اور سپرنٹنڈنٹ پولیس وشنو ولیمس کے علاوہ ایڈیشنل ایس پی، آر ڈی او اور دیگر عہدیداروں نے کمیشن کو صورتحال سے واقف کرایا۔ صدرنشین کمیشن نے امن و ضبط کی صورتحال پر قابو پانے ضلع نظم و نسق کی ستائش کی۔ انہوں نے دونوں طبقات سے بھائی چارہ اور امن و امان کی برقراری کی اپیل کی۔ کلکٹر اور ایس پی نے بتایا کہ بعض شرپسند عناصر نے نرمل کی صورتحال بگاڑنے کی کوشش کی جبکہ نرمل روایتی طور پر ہندو مسلم اتحاد کا گہوارہ ہے۔ پہلی مرتبہ نا خوشگوار واقعات سے دونوں طبقات میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ صدرنشین کمیشن نے مقامی طور پر دلتوں کے بند کے باعث مسجد کا معائنہ نہیں کیا بلکہ سرکاری گیسٹ ہائوز میں دونوں طبقات کے نمائندوں سے ملاقات کی۔ ہندوئوں اور مسلمانوں نے کمیشن کو بتایا کہ مٹھی بھر عناصر کی سرگرمیوں سے نرمل کی صورتحال بگڑی ہے۔ پولیس نے فوری طور پر کنٹرول کرلیا۔ صدرنشین محمد قمرالدین نے بے قصور افراد کے خلاف مقدمات سے دستبرداری کا مشورہ دیا۔ بتایا جاتا ہے کہ اقلیتی طبقے کے بیشتر نوجوانوں پر جو مقدمات درج کیے گئے وہ بے قصور ہیں۔ صدرنشین نے دفعہ 307 کے تحت مقدمات پر تشویش ظاہر کی اور سخت دفعات سے دستبرداری کی خواہش کی۔ سپرنٹنڈنٹ پولیس نے تیقن دیا کہ مقدمات کا جائزہ لیتے ہوئے بے قصوروں کے خلاف موجود دفعات میں ترمیم کی جائے گی۔ کمیشن کو تقریباً 20 تحریری نمائندگیاں وصول ہوئی ہیں جن میں زیادہ تر مقامی مسائل سے متعلق ہیں۔ نرمل مسجد کمیٹی کے ذمہ داروں نے بھی کمیشن سے ملاقات کی۔ صدرنشین قمرالدین نے کہا کہ بہت جلد نرمل کی صورتحال پر حکومت کو رپورٹ پیش کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT