Monday , April 23 2018
Home / شہر کی خبریں / اقل ترین قیمت کے لیے کسانوں کا احتجاج حق بجانب

اقل ترین قیمت کے لیے کسانوں کا احتجاج حق بجانب

مرکزی و ریاستی حکومتوں پر تاجرین سے ساز باز کا الزام ، سریش ریڈی
حیدرآباد ۔ 14 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : سابق اسپیکر اسمبلی سریش ریڈی نے اقل ترین قیمت کے لیے کسانوں کے احتجاج کو حق بجانب قرار دیتے ہوئے مرکزی اور ریاستی حکومتوں پر تاجرین سے خفیہ سازباز کرتے ہوئے کسانوں کو نقصان پہونچانے کا الزام عائد کیا ۔ آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سریش ریڈی نے کہا کہ ضلع نظام آباد میں لال جوار اور ہلدی کے کسان اپنی کاشت کو اقل ترین قیمت ادا کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے گذشتہ 15 دن سے احتجاج کررہے ہیں ۔ مقامی رکن پارلیمنٹ کویتا اور حکومت کسانوں کے احتجاج کو یکسر نظر انداز کررہے ہیں ۔ مرکزی بجٹ میں کسانوں کو اقل ترین قیمت فراہم کرنے کی کوشش کی گئی ہے ۔ تاہم تلنگانہ کے کسان سڑکوں پر احتجاج کررہے ہیں ۔ مرکزی و ریاستی حکومت تاجرین سے ساز باز کرتے ہوئے کسانوں کے مفادات کے خلاف کام کررہے ہیں ۔ کل ریاستی وزیر مارکیٹنگ ہریش راؤ اور ریاستی وزیر زراعت پوچارام سرینواس ریڈی نے جائزہ اجلاس طلب کیا ہے ۔ کسانوں کے جائز مطالبات کو قبول کرنے کے بجائے سابق کانگریس حکومت کو تنقیدوں کا نشانہ بناتے ہوئے اجلاس ختم کیا گیا ۔ 2008 میں بحیثیت چیف منسٹر ڈاکٹر راج شیکھر ریڈی نے جی او 153 جاری کرتے ہوئے 30 کروڑ روپئے جاری کیا ۔ ٹریڈرس کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے 11 کروڑ روپئے جاری کیا گیا ۔ سابق رکن اسمبلی اے انیل نے ٹی آر ایس کو مخالف کسان حکومت قرار دیتے ہوئے کہا کہ کسان تقریبا ایک ماہ سے احتجاج کررہے ہیں ۔ ضلع نظام آباد میں کسان غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال منظم کررہے ہیں ۔ جس سے حکومت کا سرشرم سے جھک جانا چاہئے ۔ کانگریس کے دور حکومت میں دھوکہ دینے والی سیڈ کمپنیوں کے خلاف کارروائی کی گئی تھی ٹی آر ایس حکومت تماشہ دیکھ رہی ہے ۔ کانگریس کے قائد راجہ رام یادو نے کہا کہ نظام آباد کے کسان پریشان ہیں ۔ ہلدی 5 ہزار اور لال جوار 1500 روپئے کیلو فروخت کرنے پر مجبور ہیں ۔ مقامی رکن پارلیمنٹ کویتا کسانوں سے ہمدردی کرنے کے بجائے مرکزی وزراء کے ساتھ سیلفی لینے میں مصروف ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT