Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / اقوام متحدہ میں پاکستان کو ہندوستان کا کرارہ جواب

اقوام متحدہ میں پاکستان کو ہندوستان کا کرارہ جواب

اقوام متحدہ۔ 10 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ انٹونیو گوٹیرس کی اس رپورٹ پر مایوسی کا اظہار کیا ہے جہاں انہوں نے بچوں اور مسلح جدوجہد کیلئے پیدا کردہ بعض حالات کو مسلح جدوجہد تعبیر نہ کئے جانے اور اس سے بین الاقوامی امن اور سکیورٹی کو لاحق خطرہ والی بات کہتے ہوئے مسترد کردیا۔ ہندوستان میں اقوام متحدہ کے سفیر کے نائب مستقل نمائندہ تن مایا لال جو بچوں اور مسلح جدوجہد کے موضوع پر سلامتی کونسل کے مباحثہ میں حصہ لے رہی ہیں، نے کہا کہ سلامتی کونسل کی قرارداد 1379 سیکریٹری جنرل سے درخواست کرتی ہے کہ موجودہ حالات کی ایک رپورٹ جو سلامتی کونسل کے ایجنڈہ پر بھی موجود ہے اور جس کے بارے میں سیکریٹری جنرل سلامتی کونسل کے علم میں لاسکتے ہیں جو خود ان کے مطابق بین الاقوامی امن اور سکیورٹی کیلئے خطرہ ہے۔ اس رپورٹ میں کشمیر، جھارکھنڈ اور چھتیس گڑھ کا حوالہ دیا گیا ہے۔ دوسری طرف ہندوستان نے رپورٹ میں پاکستان کے تذکرہ پر بھی برہمی کا اظہار کیا ہے اور یہ تک کہہ دیا کہ ’’نام نہاد‘‘ رپورٹ متعصبانہ ہے جو انسانی حقوق کے ارکان کیلئے قابل غور بھی نہیں ہے جہاں اس کا ادخال عمل میں آیا ہے۔ واضح رہے کہ کل اقوام متحدہ کے سیشن میں گزشتہ تین ہفتوں کے دوران تیسری بار اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل نمائندہ ملیحہ لودھی نے ایک بار پھر جموں و کشمیر اور پاک مقبوضہ کشمیر کے موضوع کو اٹھایا تھا جس کا جواب دیتے ہوئے ہندوستان نے کہا کہ پاکستان، اقوام متحدہ کے فورم کا ناجائز استعمال کررہا ہے اور ایسے حوالے دے رہا ہے جس پر کوئی بحث نہیں کی جاسکتی۔

TOPPOPULARRECENT