Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / اقوام متحدہ پر انسداد دہشت گردی کنونشن کی جلد منظوری پر زور

اقوام متحدہ پر انسداد دہشت گردی کنونشن کی جلد منظوری پر زور

بین الاقوامی امن اور سلامتی کیلئے دہشت گردی بدستور سنگین چیلنج، وزیر دفاع پاریکر کا خطاب
نئی دہلی 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج ایشیائی ممالک پر زور دیا کہ جہاں کہیں دہشت گردی کا انفراسٹرکچر پایا جائے اُسے تباہ کردینے کے فیصلہ کن عالمی لائحہ عمل کو آگے بڑھائیں اور دہشت گردی کے لئے فنڈس کی فراہمی کو روکیں کیوں کہ یہ لعنت امن و سلامتی کے لئے واحد سب سے بڑا خطرہ ہے۔ وزیر دفاع منوہر پاریکر نے ظاہر طور پر پاکستان کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ ہندوستان کئی دہوں سے بالواسطہ جنگ کا شکار ہوا ہے اور اب اقوام متحدہ کے لئے جامع کنونشن برائے بین الاقوامی دہشت گردی (سی سی آئی ٹی) کو منظور کرنے کا وقت آچکا ہے تاکہ دہشت گردی سے مؤثر طور پر نمٹا جاسکے۔ پاریکر نے کہاکہ دہشت گردی بین الاقوامی امن و سلامتی کے لئے بدستور سب سے زیادہ سنگین چیلنج برقرار ہے اور متحدہ عالمی کوشش ہی اس کو کچل سکتی ہے۔ وزیر دفاع ایک کانفرنس سے خطاب کررہے تھے جو انسٹی ٹیوٹ آف ڈیفنس اسٹڈیز اینڈ انالیسیس میں دہشت گردی سے لڑائی کے موضوع پر منعقد کی گئی۔ پاریکر نے کہاکہ دہشت گردی بلاشبہ سارے عالم کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے جہاں یہ خطرہ کئی اقوام تک وسعت اختیار کرگیا ہے وہیں اِس کے خلاف کارروائی مربوط معلوم نہیں ہوتی۔ حالانکہ عمومی اتفاق رائے ہے کہ دہشت گردانہ حرکت کسے کہتے ہیں۔ پاریکر نے کہاکہ ہندوستان دہشت گردی کے کیمپس بند کرنے اور تمام دہشت گرد گروپوں پر امتناع عائد کرنے نیز تمام دہشت گردوں پر خصوصی قانون کے تحت مقدمہ چلانے پر زور دیتا رہے گا۔ اُنھوں نے یہ بھی کہاکہ سرحد پار دہشت گردی کو سی سی آئی ٹی کے تحت جرم قرار دینے کی کوشش کی جائے گی۔ وزیر دفاع نے کہاکہ ایشیاء بعض نہایت خطرناک دہشت گرد نیٹ ورکس کا شکار ہوا ہے اور اِس براعظم سے طاقتور علاقائی کوشش بقیہ دنیا پر دباؤ بڑھائے گی کہ سی سی آئی ٹی عاجلانہ طور پر منظور کیا جائے جسے ہندوستان نے 20 سال قبل تجویز کیا تھا۔ پاریکر نے کہاکہ دہشت گرد گروپوں کو فنڈ فراہم کرنے والوں کے خلاف کارروائی ضرور ہونی چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT