Friday , October 19 2018
Home / دنیا / اقوام متحدہ کے ایشیا پیسیفک زمرہ میں ہندوستان کا انتخاب یقینی

اقوام متحدہ کے ایشیا پیسیفک زمرہ میں ہندوستان کا انتخاب یقینی

واضح اکثریت والے ملک کا انتخاب، بحرین، بنگلہ دیش،فیجی اور فلپائن بھی رکنیت کیلئے دوڑمیں

اقوام متحدہ ۔ 12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان، اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے ایشیا پیسیفک زمرہ میں منتخب کئے جانے کے قریب ترین پہنچ چکا ہے جس کی میعاد تین سال کی ہوگی۔ 193 رکنی اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نئے رکن ممالک کا جمعہ کے روز اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کیلئے انتخاب کرے گی۔ ایک خفیہ رائے دہی کے ذریعہ رکن ممالک کا انتخاب واضح اکثریت کی بنیاد پر کیا جاتا ہے جبکہ کونسل کی رکنیت کیلئے متعلقہ ممالک کو 97 ووٹس حاصل کرنا لازمی ہے۔ ہندوستانی ایشیا پیسیفک زمرہ میں منتخب ہونے کیلئے کوشاں ہے۔ ہندوستان کے علاوہ بحرین، بنگلہ دیش، فیجی اور فلپائن بھی اسی علاقائی شعبہ میں رکنیت حاصل کرنے کوشاں ہیں۔ اب جبکہ یہ دیکھا جارہا ہیکہ پیسیفک زمرہ کی رکنیت حاصل کرنے پانچ ممالک میدان میں ہیں، وہیں ہندوستان کے انتخاب کو تقریباً یقینی سمجھا جارہا ہے۔ انتخاب سے پہلے اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ و سفیر سید اکبرالدین نے بھی ٹوئیٹ کرتے ہوئے ہندوستان کے ساتھ بحرین، بنگلہ دیش، فیجی اور فلپائن کا نام لیتے ہوئے پانچ نشستوں کے لئے ان ممالک کے انتخابی میدان میں اترنے کی توثیق کی ہے۔ ایشیاء۔ پیسیفک کے لئے تمام پانچ ممالک اپنے انتخاب کیلئے کوشاں ہیں اور ہندوستان کے بارے میں یہ وثوق سے کہا جاسکتا ہے کہ اس کی رکنیت تقریباً یقینی ہے۔ رکنیت کے اصول و ضوابط کے مطابق تین سالہ میعاد کا آغاز یکم ؍ جنوری 2019ء سے ہوگا۔ یاد رہیکہ قبل ازیں ہندوستان کا جنیوا کی انسانی حقوق کونسل کے لئے 2011ء تا 2014ء اور 2014ء تا 2017ء دو میعادوں کیلئے انتخاب عمل میں آیا تھا جبکہ رکنیت کی میعادکا اختتام ڈسمبر 2017ء میں عمل میں آیا اور اصول و ضوابط کے مطابق ہندوستان کو فوری طور پر تیسری میعاد کیلئے منتخب نہیں کیا جاسکتا تھا کیونکہ اس نے پہلے ہی دو میعادیں مکمل کرلی تھیں۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی دلچسپ ہوگا کہ انسانی حقوق کونسل 47 منتخبہ رکن ممالک پر مشتمل ہے جس کی تشکیل 2006ء میں عمل میں آئی تھی جس کا مقصد دنیا میں کہیں بھی انسانی حقوق کی پامالی کے خلاف آواز اٹھانا تھا۔ کونسل کی نشتوں کو جغرافیائی طور پر پانچ علاقائی گروپس میں تقسیم کیا جاتا ہے! افریقن اسٹیٹس : 13 نشستیں، ایشیاء پیسیفک اسٹیٹس : 13 نشستیں، ایسٹرن یوروپین اسٹیٹس : 6 نشستیں، لاطینی امریکی اور کیریبین اسٹیٹس : 8 نشستیں اور ویسٹرن یوروپین اور دیگر اسٹیٹس : 7 نشستیں۔ جنرل اسمبلی کی تمام پانچ نشستوں پر کوئی مقابلہ نہیں ہوتا جس کا مطلب یہ ہیکہ تمام امیدواروں ممالک کو، ان کے حقوق ریکارڈس سے قطع نظر، کونسل کی نشستیں یقینی طور پر تفویض کی جاتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT