Sunday , September 23 2018
Home / عرب دنیا / الجزیرہ کے 3 نامہ نگاروں کو 7 سال سزائے قید

الجزیرہ کے 3 نامہ نگاروں کو 7 سال سزائے قید

قاہرہ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) مصر کی ایک عدالت نے الجزیرہ کے تین صحافیوں کو مجرم قرار دیتے ہوئے انہیں 7 سال کی سزائے قید سنائی۔ ان پر دہشت گردی سے متعلق الزامات عائد کئے گئے تھے۔ انسانی حقوق کی تنظیموں نے ان کی گرفتاری کے خلاف سخت احتجاج کیا تھا۔ آسٹریلیائی نامہ نگار پیٹر گریسٹے ، کینیڈا کے مصری نژاد شہری قاہرہ میں کارگزار بیورو چیف م

قاہرہ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) مصر کی ایک عدالت نے الجزیرہ کے تین صحافیوں کو مجرم قرار دیتے ہوئے انہیں 7 سال کی سزائے قید سنائی۔ ان پر دہشت گردی سے متعلق الزامات عائد کئے گئے تھے۔ انسانی حقوق کی تنظیموں نے ان کی گرفتاری کے خلاف سخت احتجاج کیا تھا۔ آسٹریلیائی نامہ نگار پیٹر گریسٹے ، کینیڈا کے مصری نژاد شہری قاہرہ میں کارگزار بیورو چیف محمد فہمی ، مصری فلم ساز بحیر محمد کو علیحدہ الزامات میں مزید 3 سال کی سزائے قید سنائی گئی۔ فہمی نے ملزمین کے کٹہرے سے سزا سننے کے بعد اپنی بند مٹھیاں فضاء میں لہراتے ہوئے چلّاکر کہا کہ انہیں اس کا نتیجہ بھگتنا ہوگا۔ فہمی کے بھائی عادل نے جو عدالت میں موجود تھے، کہا کہ انہوں نے میرا خاندان تباہ کردیا۔ ہر چیز بدعنوان ہے۔ ججوں نے دو برطانوی صحافیوں اور ایک ویلندیزی صحافی کو بھی اُن کی غیرحاضری میں سزائے قید سنائی۔ گریسٹے، فہمی اور محمد کو ڈسمبر میں قاہرہ کی ایک ہوٹل سے گرفتار کیا گیا تھا۔ ان پر معزول صدر محمد مرسی کی حامی تنظیم اخوان المسلمین کی تائید کا الزام تھا۔ ان تینوں اور ان کے حامیوں نے کہا کہ وہ صرف بحیثیت صحافی اپنا فرض انجام دے رہے تھے۔ میڈیا گروپوں نے اس ٹرائل کو سیاسی قرار دیا اور کہا کہ یہ حکومت اور قطر میں قائم الجزیرہ نیٹ ورک کے درمیان لڑائی کا حصہ رہا۔ حکام کا الزام ہیکہ الجزیرہ اخوان المسلمین اور مرسی کے تئیں جانبدار رہا ہے حالانکہ الجزیرہ نیٹ ورک نے کسی بھی جانبداری کی تردید کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT