Wednesday , July 18 2018
Home / ہندوستان / الور میں گاؤ دہشت گردوں کے ہاتھوں عمر خاں کی ہلاکت

الور میں گاؤ دہشت گردوں کے ہاتھوں عمر خاں کی ہلاکت

دو افراد گرفتار، ارکان خاندان کا تمام مجرمین کی گرفتاری تک پوسٹ مارٹم سے انکار
جئے پور ۔ 13 ۔ نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پولیس نے 35 سالہ عمرخان کی مبینہ طور پر گاؤ دہشت گردوں کے ہاتھوں راجستھان کے ضلع الور میں قتل کے الزام میں حراست میں لے لیا جبکہ عمرخان کے ارکان خاندان نے کہا کہ جب تک پورے خاطی گرفتار نہ ہوجائیں وہ نعش کے پوسٹ مارٹم پر راضی نہیں ہوں گے۔ راجستھان کے ضلع الور میں مبینہ گاؤ دہشت گردوں کے ہاتھوں 35 سالہ عمر خاں کی ہلاکت کے ضمن میں پولیس نے ایک شخص کو حر است میں لیا ہے ۔ راجستھان کے وزیر داخلہ گلاب چند نے اس واقعہ پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہر قسم کی صورتحال پر بروقت کنٹرول کرنے کیلئے ریاست کے پاس خاطر خواہ افاردی قوت نہیں ہے ۔ عمر خاں کی نعش 11 نومبر کو رام نگر میں ریلوے پٹریوں کے قریب پری پائی گئی تھی ۔ ان کے افراد خاندان اور سماجی جہد کاروں نے الزام عائد کیا کہ گاؤ دہشت گردوں نے انہ یں ہلاک کردیا ۔ جب وہ ایک دن قبل ایک گاڑی کے ذریعہ مویشیوں کو منتقل کر رہے تھے ایسے ہی میٹ گاؤ دہشت گردوں نے مار مار کر ہلاک کردیا تھا جس کے خلاف اس ریاست کے علاوہ ملک بھر میں غم و غصہ کا اظہار کیا گیا تھا ۔ کٹاریہ نے کہا کہ ’’ یہ واقعہ رات کے وقت پیش آیا تھا اور پولیس تحقیقات میں مصروف ہے۔ ایک شخص کو حراست میں لیا گیا ہے ‘‘۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ بہت جلد سراغ لگالیا جائے گا ۔ انہوںنے کہا کہ خاطی کے خلاف اس کی مذہبی وابستہ کا لحاظ رکھے ۔ انہوں نے کہا کہ ’’یہ مقام پر کوئی واقعہ رونما ہونے سے قبل ہی صورتحال پر کنٹرول کرنے کیلئے ہمارے پاس درکار تعداد میں افرادی قوت نہیں ہے ‘‘ ۔ الور پولیس کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ انیل بینیوال نے کہا کہ محروس شخص سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ مہلوک عمر خاں کے خاندان نے ورثاء کو معاوضہ کی ادائیگی اور ملزمین کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔ چیف منسٹر وسندھرا راجے سندھیا کے مقررہ دورہ الور سے عین قبل یہ واقعہ پیش آیا ہے ۔ راجے حلقہ لوک سبھا امور کے مختلف علاقوں کا دورہ کر رہی ہیں، جہاں بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ مہنت چند ناتھ کے انتقال کے بعد مخلوعہ نشست کو پر کرنے کیلئے ضمنی انتخابات کے انعقاد کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT