Tuesday , January 16 2018
Home / سیاسیات / الیکشن کمیشن کی انتخابی مالیہ رہنمایانہ خطوط سے دستبرداری کا مطالبہ

الیکشن کمیشن کی انتخابی مالیہ رہنمایانہ خطوط سے دستبرداری کا مطالبہ

نئی دہلی۔ 9؍نومبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ سیاسی پارٹیوں نے الیکشن کمیشن کے رہنمایانہ خطوط کی مخالفت کی ہے جن کے تحت انتخابی فنڈس کی شفافیت کو یقینی بنانے کی ہدایت دی گئی ہے اور پارٹی فنڈس کے احتساب اور انتخابی اخراجات کی حساب طلبی کا لزوم عائد کیا ہے۔ جاریہ سال یکم اکٹوبر سے یہ رہنمایانہ خطوط اور دیگر کئی اقدامات بشمول 20 ہزار روپیوں سے زیا

نئی دہلی۔ 9؍نومبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ سیاسی پارٹیوں نے الیکشن کمیشن کے رہنمایانہ خطوط کی مخالفت کی ہے جن کے تحت انتخابی فنڈس کی شفافیت کو یقینی بنانے کی ہدایت دی گئی ہے اور پارٹی فنڈس کے احتساب اور انتخابی اخراجات کی حساب طلبی کا لزوم عائد کیا ہے۔ جاریہ سال یکم اکٹوبر سے یہ رہنمایانہ خطوط اور دیگر کئی اقدامات بشمول 20 ہزار روپیوں سے زیادہ رقم کی نقد ادائیگی پر امتناع عائد کرنا نافذ العمل ہوچکے ہیں۔ 20 ہزار روپئے سے زیادہ رقم بذریعہ چیک ادا کی جاسکتی ہے۔ ان اقدامات کا قانونی و دستوری جواز طلب کرتے ہوئے کانگریس نے کہا کہ یہ رہنمایانہ خطوط قانونی طور پر ناقابل عمل ہیں اور انھیں عدالتی نظرثانی میں بالائے طاق رکھ دیا جائے گا۔ چنانچہ کانگریس نے الیکشن کمیشن سے گزارش کی ہے کہ ان رہنمایانہ خطوط کو نافذ کرنے سے پہلے الیکشن کمیشن کو تمام سیاسی پارٹیوں سے اس موضوع پر اظہار خیال کا موقع دینا چاہئے اور یہ معاملہ وزارت قانون و اِنصاف سے رجوع کرنا چاہئے تاکہ کارروائی قانون کے مطابق ہوسکے۔ آر جے ڈی اور جے ڈی یو نے بھی ایسے ہی خیالات ظاہر کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT