Tuesday , December 11 2018

الیکٹرانک مشین میں خرابی پیدا کرنے والا ایجنٹ گرفتار

کیندراپاڑہ (اڈیشہ) ۔ 17 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کیڈراپاڑہ ڈسٹرکٹ میں موضع مولاساہی کے بوتھ نمبر 193 میں اپوزیشن کانگریس کے ایک الیکشن ایجنٹ کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین میں خرابی پیدا کرنے کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا۔ اطراف و اکناف کے دیگر پولنگ بوھتوں سے بھی الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں پائی جانے والی تکنیکی خرابیوں کی شکایت م

کیندراپاڑہ (اڈیشہ) ۔ 17 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کیڈراپاڑہ ڈسٹرکٹ میں موضع مولاساہی کے بوتھ نمبر 193 میں اپوزیشن کانگریس کے ایک الیکشن ایجنٹ کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین میں خرابی پیدا کرنے کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے گرفتار کرلیا گیا۔ اطراف و اکناف کے دیگر پولنگ بوھتوں سے بھی الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں پائی جانے والی تکنیکی خرابیوں کی شکایت ملی تھی جس کی وجہ سے رائے دہی کا عمل تاخیر کا شکار ہوا۔ صبح 7 بجے سے اس ساحلی ڈسٹرکٹ کے پانچ اسمبلی حلقوں میں اندرون 4 گھنٹے 22 فیصد پولنگ کی رپورٹ ملی ہے۔ ضلع انتظامیہ کو مختلف بوتھوں سے ’’انتخابی دھاندلیوں‘‘ کی شکایت ملی ہے۔ دریں اثناء کیندراپاڑہ کلکٹر نتن بھانو داس جوالے

نے کہا کہ ملنے والی تمام شکایتوں پر غور کیا جائے گا جبکہ سیکوریٹی کے لئے مسلح پولیس کو تعینات کیا گیا ہے۔ یہاں پر 18 تا 25 سال کے نوجوان ووٹرس میں بھی جوش و خروش دیکھا گیا جو صبح سے ہی لمبی لمبی قطاروں میں ٹھہرے ہوئے تھے۔ دریں اثناء چیف الیکٹورل آفیسر کے دفتر سے جاری ایک رپورٹ میں کہا گیا ہیکہ صبح 10 بجے تک انگول ڈسٹرکٹ میں ووٹنگ کا سب سے زیادہ تناسب یعنی 19.23 فیصد نوٹ کیا گیا جبکہ دوسرے نمبر پر نیا گڑھ ڈسٹرکٹ رہا جہاں رائے دہی کا تناسب 17.5 فیصد رہا جبکہ خوردا ڈسٹرکٹ جہاں ریاست کا دارالخلافہ بھوبنیشور بھی ہے، صبح 10 بجے تک رائے دہی کا تناسب بہت کم یعنی 5 فیصد رہا۔

TOPPOPULARRECENT